امریکہ سے مذاکرات نہیں کریں گے : ایرانی وزیر خارجہ

تہران، 24 جون، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ'جواد ظریف' نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران امریکہ کے حالیہ بدمست حکومت کے ساتھ مذاکرات نہیں کرے گا.

یہ بات انہوں نے امریکی وزیر خارجہ مائيک پومپیو کے ایک بیان کے رد عمل میں کہی.

انہوں نے امریکہ کی بین الاقوامی معاہدوں کی پامالی پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی حکام اپنے رویہ کے ذریعہ سے یہ بات ثابت کی ہے کہ اس پر اعتماد نہیں کیا جاسکتا.

امریکی حکام کی بین الاقوامی قوانین کی مسلسل خلاف ورزی کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ امریکی حکومت اب ایک بدمعاش حکومت کی روپ اپنا رہا ہے جس کی وجہ سے ایران اس جیسی حکومت سے بات چیت نہیں کرسکتا.

انہوں نے کہا اگر امریکہ اپنی جارحانہ پالیسی جاری رکھی تو دنیا اور خطے کے ممالک مزید غیر مستحکم ہوگا.

یاد رہے کہ امریکی وزیر خارجہ نے حالیہ میں اپنے ایران مخالف بیانات کو جاری رکھتے ہوئے ایران پر ایک بارپھر جوہری اسلحہ بنانے کا الزام عائد کیا تھا.

مائیک پومپیو نے ایران کو دھمکی دی تھی کہ امریکہ ان کے بقول ایران کے برے عزائم کے مقابلے میں خاموش نہیں بیٹھے گا.

ایران پر جوہری ہتھیار بنانے کا الزام امریکہ نے اس وقت عائد کررہا ہے کہ وہ گذشتہ سالوں میں صیہونی حکومت کو جوہری ہتھیار بنانے میں اہم کردار ادا کیا ہے.

مستند رپورٹوں کے مطابق ناجائز صیہونی حکومت نے امریکہ اور دوسرے مغربی طاقتوں کی ملی بھگت سے اب تک دسیوں جوہری ہتھیار بناچکی ہے .

1*271**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@