ایران کیساتھ معاشی تعاون کو مزید فروغ دیا جائے گا: چین

بیجنگ، 23 جون، ارنا - چینی وزارت تجارت کے ترجمان نے اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ تعلقات کی اہمیت کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے اقتصادی تعاون کو کسی تیسرے فریق کے اندرونی قوانین کی پرواہ کئے بغیر فروغ دیا جائے گا.

چینی ترجمان نے ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ چین ماضی کی طرح ایران کے ساتھ تجارتی اور اقتصادی شعبوں میں مشترکہ تعاون جاری رکھے گا.

انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی ایران چین تعلقات اور ہمارے معاشی تعاون کو متاثر نہیں کرسکتی.

ترجمان نے مزید کہا کہ چین، امریکہ کی دوسرے ممالک کے خلاف یکطرفہ پالیسی کی مخالفت کرتا ہے اور امریکہ کے اندرونی قوانین چین کے لئے اہمیت نہیں رکھتی لہذا ہم جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی اور ایران پر یکطرفہ پابندیوں کے خلاف ہیں.

انہوں نے کہا کہ ایران اور چین کے درمیان اقتصادی تعاون کا فروغ عالمی قوانین کے برعکس نہیں. دونوں ممالک کے اقتصادی تعاون دیرینہ ہے اور ہمارا مقصد ان تعلقات کو مستقبل میں مزید مضبوط کرنا ہے.

چینی وزارت تجارت کے ترجمان نے مزید کہا کہ دونوں ممالک کی تجارتی حجم سال 2017 میں 37.300 ارب ڈالر رہی اور اس میں 2016 کے مقابلے میں 19.3 فیصد کا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے.

انہوں ںے کہا کہ چین، ایران کا سب سے بڑا تجارتی پارٹنر ہے اور دونوں ممالک کی تجارتی حجم کی بڑھتی ہوئے پیشرفت کو دیکھ کر یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ مشترکہ اقتصادی تعاون کو قابل قدر فروغ مل رہا ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@