زاہدان میں ایران اور پاکستان کی مستقل سرحدی کمیٹی کا پانچواں اجلاس

اسلام آباد، زاہدان، 21 جون، ارنا - پاکستان سے ملحقہ ایران کے سرحدی صوبے سیستان و بلوچستان کے دارالحکومت ''زاہدان'' میں دونوں ممالک کی مستقل سرحدی کمیٹی کے پانچویں اجلاس کا انعقاد کیا گیا ہے.

ریڈیو پاکستان کے مطابق، پاک ایران مستقل سرحد کمیٹی کا اجلاس گزشتہ روز زاہدان میں شروع ہوا.

اس اجلاس میں سکیورٹی مسائل، تجارتی سرگرمیوں اور باہمی تعاون پر غور کیا گیا.

پاکستانی صوبے بلوچستان لیویز فورس کے ڈائریکٹر جنرل ''طارق الرحمن'' کی قیادت میں پاکستانی وفد تفتان سرحد کے ذریعے ایران پہنچ گیا.

پاکستانی وفد میں چاغی، واشک، پنجگور، تربت اور گودار کے ڈپٹی کمشنرز اور فرنٹیر کور کے حکام شامل ہیں.

اجلاس میں دونوں ممالک کے سرحدی امور، سکیورٹی کے مسائل، سرحدی دیہات پر تجارتی سرگرمیوں اور باہمی تعاون پر غورکیا جائے گا.

گورنر جنرل صوبے سیستان کے ڈائریکٹریٹ جنرل آف سیکیورٹی اور ایڈمنسٹریشن کے سربراہ نے اس حوالے سے بتایا کہ ایرانی اور پاکستانی وفود نے سرحدی سلامتی کو مضبوط بنانے اور دہشتگرد عناصر کے خلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹنے پر بات چیت کی.

'غلام رضا گنجی' نے مزید بتایا کہ پاکستان کے سرحدی علاقت ماشکل کے 6 گاؤں تک بجلی کی ترسیل کے حوالے سے بھی گفتگو ہوئی.

انہوں نے کہا کہ اس اجلاس میں پاکستانین حکام کے ساتھ مشترکہ سرحد پر گزشتہ مہینوں میں ہونے والی دہشتگرد کاروائی جس میں 9 ایرانی بارڈ گارڈز شہید ہوئے، کو اٹھایا گیا اور دہشتگردوں کے ہاتھوں اغوا ہونے والے ایرانی سرحدی اہلکار سعید براتی کی بازیابی پر بھی گفتگو ہوئی.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@