گزشتہ سالوں میں 808 ٹن منشیات پکڑ لی گئیں: ایران

تہران، 19 جون، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران میں انسداد منشیات فورس، پاسداران انقلاب، پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی مشترکہ کوششوں کی بدولت گزشتہ سالوں میں 808 ٹن مشنیات پکڑی گئیں ہیں.

یہ بات ایران کی انسداد منشیات فورس کے سربراہ بریگیڈیئر 'محمد مسعود زاہدیان' نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی

انہوں نے مزید کہا کہ اس دوران منشیات اسمگلنگ کرنے والے درجنوں ملزموں کو بھی گرفتار کرکے انھیں عدالت میں پیش کرکے انھیں سزائیں دلوائی گئی ہیں.

بریگیڈیئر زاہدیان نے کہا کہ رواں ایرانی سال سے اب تک 197 ٹن مختلف منشیات کو قبضے میں لیا گیا ہے.

انہوں نے کہا کہ سب سے زیادہ منشیات ملک کے جنوب مشرقی سرحدی علاقوں سے پکڑی گئیں ہیں.

زاہدیان نے کہا کہ سامراجی طاقتیں دنیا بھر میں اپنی آمدنی ، بدامنی، دہشتگردوں کی حمایت کے لئے افغانستان میں منشیات کی فصلوں کی ترقی کی بھرپور کوششیں کر رہی ہیں.

انہوں نے منشیات کی اسمگلنگ میں پیسے لانچرنگ کے موضوع کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں منشیات کی اسمگلنگ کے لئے 6۔6 ارب ڈالر خرچ کیا جار رہا ہے.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران افغانستان کے ساتھ مشترکہ سرحدوں کی وجہ سے منشیات کی اسملگنگ میں سب سے بڑا متاثر ملک ہے جو سالانہ بڑی تعداد میں ایران کی مسلح افواج کے سیکورٹی اہلکار منشیات کے اسمگلروں کے ساتھ جھڑپوں میں شہید ہو رہے ہیں.

افغانستان پر امریکی جارحیت سے اب تک اس ملک میں منشیات کی پیداواری میں 10 گنا اضافہ ہوا ہے.

9393٭274٭٭

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@