ایران، آذری شہریوں کی علاج کیلئے پہلی ترجیح

باکو، 18 جون، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران میں طبی اور مختلف بیماریوں کے علاج کے لئے بہترین سہولیات موجود ہیں اور جمہوریہ آذربائیجان کے شہری اپنے علاج کے لئے ایران کو پہلی ترجیح دیتے ہیں.

آذری شہری اور مریض بیرون ملک علاج کے لئے ایران کو اپنی ترجیح قرار دیتے ہیں.

علاج کے مقصد سے ایسے آمد و رفت سے نہ صرف ایران کے لئے معاشی مواقع میسر ہوں گے بلکہ میں کرنسی کے تبادلوں میں اضافہ اور بے روزگار نوجوانوں کے لئے بھی روزگار فراہم ہوں گے.

2015 اور 2015 میں تقریبا 10 لاکھ آذری شہریوں نے ایران کا سفر کیا لہذا مجموعی طور پر ان سیاحتی سفر اور طبی دوروں کے ذریعے ایران میں سالانہ 33 ہزار روزگار کے مواقع فراہم کئے جاسکتے ہیں.

آذری عوام طبی مسائل اور مشکل بیماریوں کے علاج کے لئے ایران کو پہلا آپشن انتخاب کرتے ہیں. کیونکہ ایران جانے کے لئے نہ صرف سفر فاصلہ کم ہے بلکہ یہاں طبی سہولیات زیادہ، جدید اور طبی اخراجات بھی آسان ہیں.

تازہ ترین سروے کے مطابق، ملک میں ہر 30 سیاح کی آمد سے ایک روزگار فراہم ہوتا ہے. لہذا ایران میں میڈیکل ٹوریزم کے فروغ کے لئے بیرون ملک شہریوں کی آمد بالخصوص مریضوں کے علاج ایک سنہری موقع ہے.

اسلامی جمہوریہ ایران اور جمہوریہ آذربائیجان نے 2016 میں مشترکہ دوا سازی کارخانہ کے قیام پر اتفاق کیا اور پھر جنوری 2017 میں آذری دارالحکومت باکو کے مضافاتی علاقے میں اس مشترکہ فیکٹری کی سنگ بنیاد رکھ دی گئی.

اس کے علاوہ دونوں ممالک میڈیکل ٹوریزم کے فروغ فری زون علاقوں میں بھی مشترکہ اسپتالوں کے قیام پر تعاون کرسکتے ہیں جہاں بیرون ملک مریضوں بالخصوص آذری شہریوں کے لئے مزید سہولیات فراہم کی جاسکتی ہیں.

رپورٹ کے مطابق، میڈیکل ٹوریزم کے ذریعے دونوں ممالک کے نجی شعبوں کو بھی فائدہ ملے گا. طبی سرگرمیوں سے نہ صرف سیاحت کو فروغ مل سکتا بلکہ اس سے ملک کی معیشت کو مضبوط کرنے میں بھی مدد ملے گی.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@