امریکی یکطرفہ اقدامات سے عالمی امن کو سنگین خطرات لاحق ہیں: ایران

تہران، 11 جون، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ امریکہ کے یکطرفہ اقدامات اور جارحانہ رویے سے عالمی امن و سلامتی کو سنگین خطرات لاحق ہیں.

ترجمان دفترخارجہ بہرام قاسمی نے اپنی ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران کہا کہ امریکی اقدامات سے نہ صرف دنیا کو خطرہ بلکہ گروپ سیون بھی ان مسائل کا شکار ہے.

کینیڈا میں منعقد ہونے والے جی سیون اجلاس کے اختتامی بیان کے رد عمل میں انہوں نے کہا کہ ایران کے حوالے سے کچھ مطالبات ایران کے اندرونی معاملات میں مداخلت ہیں.

یاد رہے کہ جی سیون اجلاس کے اختتام پر مغربی ممالک نے ایران سے اپنے میزائل پروگرام کو روکنے کا مطالبہ کیا ہے.

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے یورپی یونین سے درخواست کی کہ وہ امریکہ کے ایران فوبیا پالیسیوں اور سازشوں میں نا پھنسیں.

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران دوسرے ممالک سے زیادہ خطے میں امن و امان کی بحالی میں اپنا کردار ادا کیا ہے اور کررہا ہے اور اس حوالے سے بڑی قربانیاں بھی دی ہے.

بہرام قاسمی نے امریکہ کی پالیسیوں پرکڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ جو چیز پریشانی کا باعث ہے وہ امریکہ کے یک طرفانہ اقدامات اور مطلق العنان پالیسیاں ہیں جو دنیا اور خطے کے استحکام اور امن و امان کے لئے بڑے خطرے کا باعث ہنے ہوئے ہیں.

انہوں نے مغربی ممالک کی طرف سے ایران کے میزائل پروگرام پر خدشات کو مسترد کرتے ہوئے کہاہے کہ ایران اپنے دفاعی سازوسامان اور ہتھیاروں کی تیاری پر دوسرے طاقتوں کے ساتھ سودہ بازی نہیں کرے گا اور دشمن کے مذموم عزائم کو ناکام بنانے کے لئے اپنے دفاعی میزائل پروگرام جاری رکھے گا.

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ایران خطے میں دہشت گردی کے خلاف خاص طور پر داعش جیسے تکفیری تنظیم کے قلع قمع اور شکست میں اہم کردار ادا کیا ہے اور اس حوالے سے امریکہ کے ایران مخالف تشہیراتی مہم کامیاب نہیں ہوں گے.

1*271**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@