ایران کا شمالی کوریا کہ امریکہ کیساتھ مذاکرات کرنے میں محتاط رہنے کا مشورہ

تہران، 11 جون، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے شمالی کوریا کو مشورہ دیا ہے کہ وہ امریکہ کے ساتھ مذاکرات کرنے میں انتہائی محتاط رہے کیونکہ دوطرفہ اور عالمی معاہدوں کی خلاف ورزی کرنا امریکہ کا وطیرہ ہے.

یہ بات ترجمان دفترخارجہ 'بہرام قاسمی' نے پیر کے روز تہران میں اپنی ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران ملکی اور غیرملکی صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ امریکہ تاریخ میں دوطرفہ معاہدوں اور عالمی سمجھوتوں کی خلاف ورزی اور اس سے نکلنے کا ریکارڈ بنایا ہے لہذا ہم شمالی کوریا کی قیادت کو مشورہ دیتے ہیں کہ وہ امریکیوں کے ساتھ مذاکرات میں محتاط رہے.

قاسمی نے امریکہ اور شمالی کوریا کے رہنماؤں کے درمیان ہونے والی ملاقات پر تبصرہ کرتے ہوئے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کا مؤقف واضح ہے ہم کوریائی خطے میں امن و سلامتی کے خواہاں ہیں لہذا ہم ایسے کوئی بھی اقدام جس کا مقصد قیام امن بالخصوص خطے میں معاشی خوشحالی ہو، کی حمایت کرتے ہیں.

انہوں نے کہا کہ ایران جوہری معاہدے کے حوالے سے امریکی حکومت کی وعدہ خلافی بالخصوص ڈونلڈ ٹرمپ کے منفی اقدامات کو پس منظر میں، شمالی کوریا اور امریکہ کے درمیان متوقع مذاکرات پر امید نہیں رکھتے.

قاسمی نے مزید کہا کہ ہمیں امریکیوں کے رویے پر شبہات ہیں مگر شمالی کوریا کے عوام کے حق میں امن و سلامتی کی حمایت کرتے ہیں.

انہوں نے جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی کے بعد ایران میں غیرملکی کمپنیوں کی صورتحال سے متعلق کہا کہ یورپی کمپنیوں کے پاس پابندیوں کی واپسی کے لئے 90 سے 120 دن کی مہلت ہے.

بہرام قاسمی نے مزید کہا کہ ہمیں انتظار کرنا ہوگا اور دوسری جانب ایران کے غیرملکی اتحادیوں کے ساتھ طے پانے والے مذاکرات کے نتائج بھی آنا ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@