دنیا کو صہیونیوں کے جوہری پروگرام سے خطرہ ہے: ایرانی مندوب

لندن، 8 جون، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے ناجائز صہیونی ریاست کی جوہری سرگرمیوں کو خطی اور دنیا کی اقوام کے لئے بڑا خطرہ قرار دیتے ہوئے اس مسئلے پر کڑی نظر رکھنے کا مطالبہ کیا ہے.

یہ بات بین الاقوامی جوہری توانائی ادارے میں تعینات ایران کے مستقل مندوب 'رضا نجفی' نے بورڈ آف گورنرز کے اختتامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے صہیونیوں کے خطرناک جوہری پروگرام سے متعلق مغربی ممالک کے دوہرے معیار پر کڑی تنقید کرتے ہوئے صہیونیوں کے ساتھ کسی بھی طرح کے جوہری تعاون اور جوہری ٹیکنالوجی کے تبادلے کو بند کرنے کا مطالبہ بھی کیا.

انہوں نے مزید کہا کہ صہیونیوں کی جوہری سرگرمیوں سے علاقائی سلامتی کو خطرات لاحق ہیں اور اس سے تخفیف اسلحہ معاہدے کی ساکھ کو نقصان پہنچے گا.

رضا نجفی نے کہا کہ صہیونی سائنسدانوں کو جوہری ھتھیار رکھنے والے ممالک کے جوہری مراکز پر کھی رسائی حاصل ہے جہاں سے وہ مہلک ھتھیاروں سے متعلق حساس تفصیلات حاصل کرتے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ این پی ٹی معاہدے کے رکن ممالک کے جوہری سائنسدان مشرق وسطی میں صہیونیوں کے کرایہ کے دہشتگردوں کے ہاتھوں نشانہ بنے ہیں.

ایرانی مندوب نے کہا کہ جب تک ناجائز صہیونی ریاست غیرمشروط طور پر این پی ٹی معاہدہ اور تخفیف اسلحہ معاہدے میں شامل نہ ہو اور اس کے جوہری مراکز عالمی جوہری توانائی ادارے کے زیرنگرانی نہ ہوں تو صہیونیوں کی جوہری سرگرمیوں سے عالمی اور خطی امن و سلامتی کو خطرہ برقرار رہے گا لہذا آئی اے ای اے کو چاہئے کہ اس مسئلے کو اپنے ایجنڈے میں شامل رکھے.

اس اجلاس کے موقع پر کویتی مندوب نے عرب گروپ کی نمائندگی سے ایک مشترکہ اعلامیہ کو پڑھ کر سنایا جس میں صہیونیوں کی جوہری سرگرمیوں کی مذمت کی گئی ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@