یورپ غیرمشروط طور پر ایران کے نقصانات کا ازالہ کرے: ظریف کا خط

تہران، 8 جون، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ اگر جوہری معاہدے کا تسلسل جاری رکھنا ہے تو اس معاہدے میں موجود فریقین اور دیگر تجارتی پارٹنرز کو چاہئے کہ امریکی علیحدگی سے ایران کو ہونے والے نقصانات کو بغیر کسی شرط کے ازالہ کریں.

یہ بات 'محمد جواد ظریف' نے مختلف ممالک کے ہم منصوبوں کے نام اپنے خصوصی مراسلے میں کہی.

انہوں نے جوہری معاہدے کے فریقین اور عالمی تجارتی شراکت داروں پر زور دیا کہ وہ قومی، علاقائی اور عالمی سطح پر ایران کے نقصانات کا ازالہ کریں.

ظریف نے مزید کہا کہ انہوں نے اپنے غیرملکی ہم منصبوں کو اس لئے یہ خط لکھا ہے کہ وہ جوہری معاہدے سے متعلق تازہ ترین صورتحال اور امریکہ کے منفی اقدامات سے دوسروں کو آگاہ کریں.

انہوں نے کہا کہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ایران پر من گھڑت اور بے بنیاد الزامات لگا کر دھمکی دی ہے کہ اگر ایران امریکی خواہشات کے سامنے سر نہ جھکائے تو امریکہ، ایران کے خلاف تاریخ کی سب سے بدترین پابندیاں اور مالیاتی دباؤ استعمال کرے گا.

محمد جواد ظریف نے کہا کہ ایران نے خطے میں دہشتگردوں اور انتہاپسندوں کے خلاف مخلصانہ طور پر جنگ لڑی ہے جبکہ امریکہ بے بنیاد الزامات کے تحت ہماری ان کاوشوں کو جھٹلا رہا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ مجھے یقین ہے کہ دیگر ممالک امریکی جھوٹے دعووں سے آگاہ ہے لہذا ہمیں امریکہ کو یہ اجازت نہیں دینی چاہئے کہ وہ جوہری معاہدے سے نکل کر اس اقدام سے غلط فائدہ اٹھائے.

ظریف نے کہا کہ یقینا آج ہمارے خطے میں بدامنی اور عدم استحکام کی ایک بڑی وجہ امریکہ ہے. امریکہ کے برعکس ایران نے ہرگز کسی ملک کے خلاف جارحیت نہیں بلکہ ہم پر 8 سال جنگ مسلط کی گئی جس کی امریکہ اور اس کے علاقائی اور مغری اتحادیوں نے بھرپور حمایت کی تھی.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@