ایران میں پہلی بار جوہری معاہدے کے ماہرین کے اجلاس کا انعقاد

تہران، 7 جون، ارنا - ایران جوہری معاہدے کے نفاذ کے بعد پہلی بار تہران میں ایران اور معاہدے کے دیگر 5 فریقین کے ماہرین کے اجلاس کا انعقاد کیا گیا ہے.

تفصیلات کے مطابق، جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی کے بعد اب اس میں ایران سمیت تین یورپی ممالک، یورپی یونین، چین اور روس شامل ہیں.

امریکی علیحدگی سے پہلے تک ایسی نشستیں ایران میں منعقد نہیں ہوئیں اور ایسا لگتا ہے کہ اس کی وجہ ہی امریکہ تھا جبکہ امریکہ کی علیحدگی کے بعد اس رکاوٹ کا خاتمہ ہوگیا.

جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے ماہرین کا اجلاس جمعرات کے روز سے شروع ہوا جس میں ایرانی دفترخارجہ میں قائم جوہری معاہدے کی نگران کمیٹی کے چیئرمین ''اسماعیل بقایی'' ایرانی وفد کی قیادت کررہے ہیں.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایران اور گروپ 4+1 کے درمیان ماہرین کی آخری نشست قریب دو ہفتے پہلے ویانا میں منعقد ہوئی تھی جس کے بعد جوہری معاہدے کے نائب وزراء کا مشترکہ اجلاس کا انعقاد بھی کیا گیا تھا.

گزشتہ دنوں برطانیہ، فرانس اور جرمنی کے وزرائے خزانہ اور خارجہ نے اپنے امریکی ہم منصوبوں کو ایک مشترکہ مراسلہ بھیجا جس میں کہا گیا تھا کہ یورپ، ایران جوہری معاہدے کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے پُرعزم ہے.

یورپی ممالک نے اس مراسلے میں امریکہ سے مطالبہ کیا کہ وہ ایران پر لگائے جانے والی ممکنہ پابندیوں سے یورپی کمپنیوں کو سزا نہ دے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@