صومالی قزاقوں کے ہاتھوں اغوا شدہ 4 ایرانی ملاحوں کی رہائی

تہران، 7 جون، ارنا - ایران کے حساس اداروں کے اہلکاروں نے انٹیلی جنس آپریشن کر کے تین سال پہلے صومالیہ کے بحری قزاقوں کے ہاتھوں اغوا ہونے والے 4 ایرانی ملاحوں کو آزاد کرایا لیا.

تفصیلات کے مطابق، ایران کے جنوب مشرقی صوبے سیستان و بلوچستان سے تعلق رکھنے والے چار ملاح ''مسعود بلوچی، احمد بلوچی، آدم بلوچی اور شیر محمد تابہ زر'' 2015 کو بین الاقوامی پانیوں اور صومالیہ کے قریب اغوا ہوئے تھے.

جمعرات کے روز رہائی پانےوالے ایرانی ملاحوں کو تہران پہنچایا گیا جہاں وزیر انٹیلی جنس علامہ 'سید محمود علوی' نے ان کا استقبال کیا.

اس موقع پر ایرانی وزیر انٹیلی جنس میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ صومالی قزاقوں کے ہاتھوں اغوا ہونے والے ملاحوں کی آزادی اتنی آسان نہیں تھی اور نہ ہی ان عناصر سے رابطہ کرنا آسان تھا.

انہوں نے مزید کہا کہ پاسداران انقلاب کے قدس کور، دفتر خارجہ اور وزارت انٹیلی جنس کے اہلکاروں نے کامیابی کے ساتھ خفیہ آپریشن کیا اور آج ہم اپنے عزیزوں کو صحت و تندرستی کے ساتھ اپنے پاس دیکھ رہے ہیں.

سید محمود علوی نے کہا کہ صدر حسن روحانی کے دورہ چابہار کے موقع پر اغوا شدہ ملاحوں کے اہل خانہ سے ملاقات ہوئی جس کے بعد صدر مملکت نے وزارت انٹیلی جنس کو حکم دیا کے اس مسئلے کو جلد حل کرے.

انہوں نے ماہ رمضان کے موقع پر اور یوم القدس سے پہلے ملاحوں کی آزادی پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے مزید کہا کہ جیسا کے ہمارے یہ عزیز آزاد ہوگئے انشااللہ القدس بھی جلد غاصب صہیونیوں کے ہاتھوں سے رہائی پائے گا.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@