جوہری معاہدے کو بچانا ہے تو ایران کے مفادات کو یقینی بنانا ہوگا: نجفی

لندن، 6 جون، ارنا - بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی (IAEA) میں تعینات ایران کے مستقل مندوب نے کہا ہے کہ اگر جوہری معاہدے کو ختم ہونے سے بچانا ہے تو علاقائی اور عالمی سطح پر ایرانی مفادات کو یقینی بنانا ہوگا.

یہ بات 'رضا نجفی' نے عالمی جوہری ادارے کے بورڈ آف گورنرز کے سہ ماہی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئےکہی.

انہوں نے جوہری معاہدے سے امریکہ علیحدگی کے بعد کی صورتحال پر روشنی ڈالی.

ایرانی سفیر نے کہا کہ جوہری معاہدہ ایک عالمی سمجھوتہ ہے جس پر نظرثانی یا ازسرنو مذاکرات کیکوئی گنجائش نہیں ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ نے یکطرفہ اقدام کے تحت جوہری معاہدے سے نکل کر عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی کی اور دنیا کو بتایا کہ وہ ایک بعدمعاش حکومت ہے جس کے سامنے عالمی قوانین اور ضوابط کی کوئی اہمیت نہیں ہے.

رضا نجفی نے کہا کہ اگر جوہری معاہدے کے دیگر فریقین اسے بچانا ہے تو انھیں سب سے پہلے ایرانی مفادات کے تحفظ پر ضمانت دینی ہوگی.

انہوں نے عالمی جوہری ادارے کے بورڈ آف گورنرز سے مطالبہ کیا کہ وہ اس حوالے سے اپنی ذمے داری ادا کرے تو معاہدے سے یکطرفہ طور پر نکلنے والے ملک کو یہ اجازت نہ دے کہ وہ دوسرے فریقین کی جگہ پر فیصلہ کرے.

رضا نجفی نے ایران کے پُرامن جوہری پروگرام کے خلاف ناجائز صہیونی ریاست کے الزامات کو سختی سے مسترد کرتے ہوئے کہا کہ صہیونیوں کے پاس خطرناک ترین ھتھیار بشمول جوہری ھتھیار موجود ہیں جن سے دنیا کو بڑے خطرات لاحق ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ صہیونی حکمران محضکہ خیز الزامات کے ذریعے اپنی خطرناک جوہری سرگرمیوں کو دنیا سے نہیں چھپا سکتے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@