حزب اللہ شام میں نہ ہوتی تو داعش لبنان میں آجاتے: لبنانی اسپیکر

بیروت، 6 جون، ارنا - لبنانی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے کہا ہے کہ اگر حزب اللہ کے جوان شام میں موجود نہ ہوتے تو آج لبنان میں داعش کے دہشتگردوں کا راج ہوتا.

یہ بات 'نبیہ بری' نے روسی خبر رساں ادارے سپتنک کو خصوصی انٹریو دیتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے شام سے ایران اور حزب اللہ کے پیچھے ہٹنے کے مطالبے کی مذمت کرتے ہوئے مزید کہا کہ شام کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر وہاں سے ایران اور حزب اللہ کا انخلا ممکن نہیں.

لبنانی اسپیکر نے کہا کہ شام کی مکمل آزادی اور ملک میں مضبوط اتحاد کی صورت میں ایران اور حزب اللہ واپس جاسکتے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران شامی حکومت کی باضابطہ درخواست پر وہاں موجود ہے جبکہ روس بھی دمشق کی اجازت سے شام میں موجود ہے.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایران اور لبنان کی مزاحمتی تنظیم حزب اللہ شامی حکومت کی درخواست پر دہشتگردوں کے خلاف جنگ میں تعاون کرنے کے مقصد سے شام میں موجود ہیں جبکہ دوسری جانب ناجائز صہیونی ریاست کو ایران اور حزب اللہ کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ سے تشویش ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@