ایران کے حالیہ فیصلے کا مطلب جوہری معاہدے سے نکلنا نہیں: فرانسیسی صدر

نیو یارک، 6 جون، ارنا - فرانس کے صدر نے کہا ہے کہ جوہری سرگرمیوں کو بڑھانے کے حوالے سے ایران کے حالیہ فیصلے کا مطلب جوہری معاہدے سے نکلنا نہیں ہے.

یہ بات 'ایمانویل میکرون' نے فرانسیسی دارالحکومت پیرس میں صہیونی وزیراعظم کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے ایران جوہری معاہدے کے تمام فریقین پر زور دیا کہ وہ کشیدگی کی طرف بڑھنے سے محتاط رہیں.

صدر میکرون کا کہنا تھا کہ اگر کسی ایک فریق نے یکطرفہ طور پر جوہری معاہدے سے علیحدہ ہوا تو دوسرے فریق بھی اس کا پابند رہنے کو ضروری نہیں سمجھیں گے.

انہوں نے مزید کہا کہ جوہری معاہدہ زبردست سمجھوتہ تو نہیں تھا مگر کچھ نہ ہونے سے تو بہتر ہے.

فرانسیسی صدر نے کہا کہ وہ تمام فریقین پر زور دیتے ہوئے کہ صورتحال کو پُرامن رکھیں اور کشیدگی سے باز رہیں.

انہوں ںے مزید کہا کہ عالمی جوہری توانائی ایجنسی ایرانی معاہدے پر نگرانی کررہی ہے لہذا اس کا کوئی نعم البدل بھی نہیں ہے.

یاد رہے کہ ایرانی سپریم لیڈر حضرت آیت اللہ سید علی خامنہ ای نے گزشتہ دنوں ملک کی اٹامک انرجی آرگنائزیشن کو یورینیم افزودگی کا حکم دے دیا.

انہوں نے فرمایا تھا کہ اس کا لیول 190000 ایس ڈبلیو یو تک ہوگا اور اس عمل میں تاخیر نہیں ہونی چاہئے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@