امریکہ مشرق وسطی میں ایران کو اپنے لئے رکاوٹ سمجھتا ہے: روسی سیاستدان

ماسکو، 4 جون، ارنا - سنیئر روسی سیاستدان نے کہا ہے کہ امریکہ، ایران کو مشرق وسطی میں اپنے توسیع پسندانہ عزائم کے لئے رکاوٹ سمجھتا ہے اسی لئے اس نے خطے میں اسلامی جمہوریہ کے اثر و رسوخ کو کم کرنے کے لئے توجہ مرکوز کی ہے.

ان خیالات کا اظہار روس کی لبرل ڈیموکریٹک پارٹی کے سربراہ بین الاقوامی شعبہ 'گینیڈی آفدیو' نے ارنا نیوز ایجنسی کے نمائندے سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا.

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے مشرق وسطی کے ممالک میں مسلحانہ عزائم کے ذریعے اثر رسوخ ڈالنے کی امریکی سازش کو ناکام بنادیا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ اس بات پر مطمئن تھا کہ شام و عراق میں دہشتگردی کی حمایت کرکے ان ممالک میں اپنے اہداف کو حاصل کرسکتا ہے اسی لئے وہ اربوں ڈالر خرچ بھی کئے.

روسی سیاستدان نے کہا کہ مگر ایران نے دہشتگردی کے خلاف شام و عراق کی مدد کی اور اس نے روس کے تعاون سے ان ممالک کی افواج کو دہشتگردی کا قلع قمع کرنے میں تعاون فراہم بھی کیا.

انہوں نے مزید کہا کہ شام میں داعش کے دہشتگردوں کی یکے بعد دیگری سنگین شکست کی وجہ سے امریکہ، اس کے مغربی اتحاد اور خطے کے بعض ممالک کی چیخیں نکل گئیں.

گینیڈی آفدیو نے کہا کہ امریکہ، ایران اور شامی حکومت کے دیگر گروہوں سے مطالبہ کررہا ہے کہ وہ جنوبی شام سے نکل جائیں جبکہ یہ ایک غیرقانونی مطالبہ ہے کیونکہ امریکہ خود اس وقت شمالی شام میں غیرقانونی طور پر موجود ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@