ایران جوہری معاہدہ یورپ کیلئے سلامتی کی حیثیت رکھتا ہے: خاتون یورپی رہنما‎

تہران، 29 مئی، ارنا - یورپی یونین کی چیف خارجہ پالیسی نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے کے تحفظ کے لئے یورپی ممالک پرعزم ہیں کیونکہ ہماری نظر میں ایران جوہری معاہدہ یورپ کیلئے نہ صرف اقتصادی لحاظ سے بلکہ سیکورٹی کی حیثیت سے بھی اہمیت کا حامل ہے.

یہ بات 'فیڈریکا مغرینی' نے بیلجیم کے دارالحکومت برسلز میں منعقدہ یورپی وزرائے خارجہ کے اجلاس کے موقع پر میڈیا کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع میں انہوں نے بتایا کہ یورپی یونین، جوہری معاہدے کو بچانے کے لیے پر عزم ہے ہرچند کہ یہ آسان اقدام نہیں ہوتا ہے.

مغرینی نے کہا کہ اس اجلاس میں یورپی یونین کے رکن ممالک نے ایران میں یورپی سرمایہ کاروں کی حمایت کو جاری رکھنے کے لیے سنجیدہ اقدام اٹھانے پر زور دیا.

یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی سربراہ نے جوہری معاہدے کے حوالے سے مشترکہ کمیشن کی گزشتہ ہفتے کی نشست کو مثبت قرار دیتے ہوئے اس کمیشن کی سرگرمیوں کے تسلسل پر زور دیا.

انہوں نے جوہری معاہدے کی سیکورٹی حیثیت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ جوہری معاہدے کے بغیر یورپ اور خطے کی سلامتی خطرے میں ڈالے گی اسی لیے ہم اس معاہدے کے تحفظ پر اصرار کرتے ہیں.

یورپی وزرائے خارجہ کے اجلاس کا ایران اور جوہری معاہدے میں شامل 5 مغربی طاقتیں کے درمیان مشترکہ کمیشن کی نشست کے تین روز بعد انعقاد کیا گیا جس میں ایران کے ساتھ اقتصادی اور تجارتی روابط کو معمول بنانے کی ضرورت پر زور دیا گیا.

یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے 8 مئی کو ایک بار پھر ایران اور جوہری معاہدے کے خلاف پرانے الزامات کو دہرا کر اس معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی کا اعلان کردیا تھا.

ٹرمپ کی علیحدگی کے ردعمل میں یورپی ممالک نے کہا کہ وہ ایران جوہری معاہدے پر قائم رہیں گے.

صدر اسلامی جمہوریہ ایران ڈاکٹر حسن روحانی نے بھی ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے جوہری معاہدے سے علیحدگی کے اعلان کے ردعمل میں کہا کہ آج سے یہ معاہدہ ایران اور اس پر دستخط کرنے والے 5 فریقین کے درمیان رہے گا.

انہوں نے ایرانی قوم کو اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ اگر موجودہ صورتحال میں ہمارے قومی مفادات کو تحفظ نہ ملے تو وہ ایک بار پھر قوم سے خطاب کرتے ہوئے ریاست اور حکومت کے تعمیری فیصلوں سے آگاہ کریں گے.

9410*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@