ایران کی خودمختاری اور طاقت کی وجہ سے امریکہ اس سے دشمنی کررہا ہے: سابق الجیریائی وزیر

الجیریا، 28 مئی، ارنا - الجیریا کے سابق وزیر سیاحت نے ایران کے خلاف امریکی دشمنی اور جوہری معاہدے سے علیحدگی کی وجوہات کچھ یوں بتایا کہ امریکہ، ایران کی طاقت اور خودمختاری کی وجہ سے اس کے ساتھ دشمنی کررہا ہے.

یہ بات 'عبدالقادر بن قرینہ' جو الجیریا کی قومی تعمیر نو تحریک کے سربراہ بھی ہیں، نے ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ایک آزاد اور خودمختار ریاست ہے جس نے عالمی سامراج کے زیر پرچم آنے کو مسترد کردیا اسی وجہ سے آج امریکہ سمیت بعض دیگران ممالک غم و غصے میں ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ خودمختار ممالک اور مزاحمتی عمل میں شامل افراد کو اپنے عزائم میں رکاوٹ سمجھتا ہے لہذا وہ خطے میں اپنی مہم جوئی جاری رکھنے کے مقصد سے ایران جوہری معاہدے سے بھی الگ ہوگیا.

سابق الجیریائی وزیر کا کہنا تھا کہ امریکہ خطے میں اپنے مقاصد کے حصول کے لئے جابر حکومتوں اور آمرانہ نظام کی بھی کھلی حمایت کرتا ہے اور اس کے ساتھ وہ مسلمانوں کے درمیان خلفشار پیدا کررہا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ شیعہ سنی اور عیسائیوں کے درمیان اختلافات کو ہوا دے کر مسلم اور عرب کو تقسیم کرنا چاہتا ہے.

عبدالقادر بن قرینہ نے کہا کہ خطے میں ناجائز صہیونی ریاست کو طاقتور بنانا امریکہ کی پہلی ترجیح ہے جبکہ بدقسمتی سے آج بعض عرب ممالک امریکی ایما پر ناجائز صہیونی ریاست کے ساتھ تعلقات قائم کررہے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ، قابض صہیونی ریاست اور خلیج فارس میں بسنے والے بعض عرب ممالک مزاحمت فرنٹ کے حامی ملکوں کے خلاف سازشیں کررہے ہیں اور ان کا مقصد جنوبی لبنان اور فلسطین میں اسلامی مزاحمتی عمل کو متاثر کرنا ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@