ظریف کے دورہ بھارت کا مقصد چابہار میں باہمی مفادات کو تحفظ فراہم کرنا ہے

نئی دہلی، 28 مئی، ارنا - ایک بھارتی اخبار نے کہا ہے کہ ایران کے وزیر خارجہ کے دورہ بھارت کا مقصد جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی کے پس منظر میں چابہار بندرگاہ کے منصوبے میں دونوں ممالک کے مفادات کو تحفظ فراہم کرنا ہے.

بھارتی اخبار 'دی ایشین ایج' نے باخبر ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی جوہری معاہدے سے علیحدگی کے بعد 'محمد جواد ظریف' کا دورہ بھارت چابہار بندرگاہ میں ایران اور بھارت کے مشترکہ مفادات کے تحفظ کے لئے نہایت اہمیت کا حامل ہے.

اخبار نے ایرانی وزیر خارجہ کی بھارتی ہم منصب کے ساتھ ہونے والی ملاقات کا ذکر کرتے ہوئے مزید کہا کہ چابہار میں بھارتی سرمایہ کاری ہورہی ہے لہذا ظریف کے دورے سے اس تعاون مستحکم بنانے میں اہم پیغام ملے گا.

دی ایشین ایج نے کہا کہ رواں مہینے میں بھارت نے ایک محتطانہ رویے کے تحت ایران جوہری معاہدے سے امریکہ علیحدگی پر اپنے ردعمل میں کہا کہ پُرامن جوہری ٹیکنالوجی کا استعمال ایران کا جائز حق ہے جس کا احترام کرنا چاہئے.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ بھارت، ایران اور امریکہ کے درمیان مذاکرات کے ذریعے مسائل کا حل چاہتا ہے. بھارت چابہار بندرگاہ کے فروغ کے لئے ایران کے ساتھ تعاون کررہا ہے لہذا ایران اور بھارت کے مفادات اہم اور اسٹریٹیجک ہیں.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@