وائٹ ہاؤس کی ایران پالیسی سمجھ سے بالاتر ہے: سابق امریکی مشیر

نیو یارک، 26 مئی، ارنا - سابق امریکی وزیر خارجہ جان کری کے مشیر کا کہنا تھا کہ مائیک پومپیو کی ایران مخالف نئے اتحاد کے قیام کی خواہش ممکن نہیں ہوگی کیونکہ وائٹ ہاؤس نے جو ایران پالیسی اپنائی ہے وہ سمجھ سے بالاتر ہے.

یہ بات 'تھامس کینٹرمین' نے ارنا نیوز ایجنسی کے نمائندے کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو ایران کے خلاف بین الاقوامی اتحاد تشکیل دینے کا خواب دیکھ رہے ہیں مگر یہ شرمندہ تعبیر نہیں ہوگا کیونکہ ان کی حالیہ باتوں سے یہ ثابت ہوتی ہے کہ ایران سے متعلق وائٹ ہاؤس کی پالیسی واضح نہیں ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ مائیک پومپیو نے ایران سے ایسے مطالبات کئے جن پر عمل درآمد ممکن نہیں ہے.

تھامس کینٹرمین کا کہنا تھا کہ آج ٹرمپ انتظامیہ کے مقاصد پر نہ صرف عالمی اتفاق رائے نظر نہیں آتا بلکہ چین اور روس سمیت یورپی ممالک ٹرمپ کے اقدامات سے ناراض نظر آرہے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کی تیل برآمدات کو روکنے یا پابندیوں کو برقرار رکھنے کے لئے عالمی اتحاد کی تشکیل کوئی آسان بات نہیں ہے.

سابق امریکی مشیر نے ٹرمپ انتظامیہ کی جارحانہ پالیسی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مائیک پومپیو نے ایران کی جانب سے دہشتگردوں کی حمایت کی باتوں کو بڑھا چڑھا کر پیش کیا اور انہوں نے یہ باتیں انتہاپسندانہ سوچ کے مطابق کیں.

انہوں نے مزید کہا کہ ٹرمپ انتظامیہ نے جوہری معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے اور یہ ایران کا جائز حق ہے کہ امریکہ پر عدم اعتماد کا اظہار کرے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@