جنوبی شام میں جاری آپریشن میں ہمارا کوئی کردار نہیں: ایران

دمشق، 25 مئی، ارنا - اردن میں تعینات ایرانی سفیر نے کہا ہے کہ جنوبی شام میں جاری فوجی آپریشن میں ایران کا کوئی کردار نہیں اور نہ ہی اس علاقے میں ہماری کوئی موجودگی ہے.

یہ بات 'مجتبی فردوسی پور' نے اردنی اخبار 'الغد' کو خصوصی انٹریو دیتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے شام میں دہشت گردوں کی شکست کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ دمشق کے مضافاتی علاقے اور مشرقی غوطہ میں ایران کے عسکری مشیروں کا کوئی کردار نہیں بلکہ ان آپریشنز میں صرف شامی فوج موجود تھی.

ایرانی سفیر نے مزید کہا کہ شام کے مرکز اور جنوبی علاقوں میں حکومت افواج روسی فورسز کی مدد سے دہشت گردوں کے خلاف مقابلے میں شریک ہیں.

انہوں نے کہا ان کے خیال میں شام کے جنوبی علاقے درعا میں اگر دہشت گرد عناصر حکومت کے ساتھ امن مذاکرات کرنے سے انکار کریں گے تو اس کے ردعمل میں بہت جلد بڑی فوجی کاروائی کا آغاز کیا جائے گا جس کا اصل مقصد علاقے سے دہشت گردوں کا صفایا کرنا ہے.

انہوں نے ایران اور اردن کے درمیان شام میں امن مذاکرات کے لئے کی کئی کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران اور اردن استانہ کے شامی حکومت اور مخالف ڈہروں کے درمیان امن مذاکرات کی کامیابی کے لئے اہم کردار ادا کرسکتے ہیں.

انہوں نے کہا کہ ایرانی فوجی مشیروں شامی حکومت کی درخواست پر شامی افواج کے ساتھ تعاون کررہے ہیں جس کامقصد دہشت گردی کا خاتمہ ہے.

1*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@