معذور افراد کی بحالی پر ایران اور پاکستان کا تعاون اہم قرار

اسلام آباد، 24 مئی، ارنا - عالمی ادارہ صحت (WHO) کے عہدیدار نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان معاشرے میں معذور افراد کی بحالی اور پولیو کے خاتمے کے لئے موثر تعاون کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں.

یہ بات پاکستان میں تعینات نمائندہ عالمی ادارہ صحت 'محمد آساھی اردکانی' نے ارنا نیوز ایجسنی کے نمائندے کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہی.

ایران نے پاکستان کو پولیو کے خاتمے کے لئے تعاون کی پیشکش کی تھی جس پر عالمی ادارہ صحت کے نمائندہ نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران صحت اور طبی امداد کی فراہمی میں اعلی تجربات کا مالک ہے جو خطے کے لئے باعث فخر ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ایران نہ صرف معذوروں کی بحالی اور پولیو کے خاتمے کے لئے موثر تعاون پیش کرسکتا ہے بلکہ وہ طبی اور صحت کے دیگر شعبوں میں بھی مختلف ممالک کے ساتھ موثر تعاون کرسکتا ہے.

محمد آساھی نے کہا کہ ایران میں صحت کا نظام مضبوط ہے جس کی بدولت وہاں صحت کی صورتحال نہایت قابل اطمینان ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور پاکستان دونوں مشرقی بحیرہ روم علاقے کی تنظیم کے رکن ہیں اور ایران اپنے موثر تجربات بالخصوص تعلیم کے شعبے میں ہمسایہ ملک کے ساتھ تعاون کو فروغ دے سکتا ہے.

نمائندہ عالمی ادارہ صحت نے معذو افراد کی بحالی سے متعلق کہا کہ پاکستان میں اس وقت 30 لاکھ معذور افراد ہیں جنہیں بحالی کے وسائل کی ضرورت ہے، ان میں سے 20 لاکھ معذور دیہی علاقوں میں زندگی بسر کرتے ہیں اور ان افراد کو ایسے علاقوں میں مزید مشکلات کا سامنا ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@