ایران کی شام میں موجودگی یا واپسی کا فیصلہ ہم کریں گے: دمشق

تہران ،23 مئی، ارنا - نائب شامی وزیر خارجہ 'فیصل مقداد' نے کہا ہے کہ شام سے ایران اور حزب اللہ کی فوجی مشیروں اور فورسز کے انخلا‏ء شامی حکومت کی صوابدید پر ہے اور ہم بیرونی طاقتوں کی دباؤ پر اس بارے میں فیصلہ نہیں کریں گے.

روسی خبررساأ ادارے 'اسپنٹک' کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شامی حکومت نے اپنی مفادات کے تحت ایران کی فوجی مشیروں اور حزب اللہ کے جنگجوؤں کو تعاون کی دعوت دی ہے اس لئے ان فورسز کی موجودگی سے شامی جغرافیائی حدود کی خلاف ورزی نہیں ہوئی ہے.

انہوں نے کہا ہم ایرانی فوجی مشیروں اور حزب اللہ کے جنگجوؤں کے شام سے انخلاء کے لئے بیرونی طاقتوں سے کبھی بات چیت نہیں کریں گے.

یاد رہے کہ روسی حکومت نے حال ہی میں اعلان کیا تھا کہ شام میں سیاسی عمل شروع ہوتے ہی بیرونی فورسز اس ملک سے نکل جائیں گے.

اس موقف کے رد عمل میں شامی نائب وزیر خارجہ نے کہا کہ میرے خیال میں روسی حکومت کا مطلب قانونی طور پر شام میں دہشت گردی کے خلاف برسرپیکار استقامتی محاذ کی سرگرمیاں نہیں ہے بلکہ وہ عناصر ہے جو غیر قانونی طور پر شامی سرزمین پر قابض ہے.

انہوں نے کہا جو طاقتیں ہماری اجازت کے بغیر شام میں اپنے اہداف کے لئے سرگرم ہیں ہم سمجتھے ہیں اور ان فورسز کو فوری طور پر شام سے نکل جانا چاہیئے.

1*271**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@