ایرانی حکام اور مقتدیٰ صدر کے تعلقات برادرانہ ہیں: ایرانی سفیر

بغداد، 22 مئی، ارنا - عراق میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر نے کہا ہے کہ ایرانی قیادت اور 'سید مقتدیٰ صدر' کے درمیان دوستانہ اور برادرانہ تعلقات قائم ہیں.

یہ بات 'ایرج مسجدی' نے ارنا نیوز ایجنسی کے نمائندے کو خصوصی انٹریو دیتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے ایران اور مقتدیٰ صدر کے درمیان اختلافات سے متعلق میڈیا میں شائع ہونے والی بعض افواہوں کی تردید کردی.

ایرانی سفیر نے عراق کے چوتھے انتخابات میں مقتدیٰ صدر کی قیادت میں اتحادی جماعت کو بیشتر سیٹ ملنے پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ سید مقتدیٰ صدر ایران کے ہر دل عزیز بھائی اور ہمارے دوست ہیں اور دونوں ممالک کے تعلقات کو بڑھانے کے حوالے سے ان کا اہم کردار ہے.

ایرج مسجدی نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور مقتدیٰ صدر کے درمیان تعلقات دیرینہ ہے جبکہ صدر خاندان کے دو معزز شہید محمد باقر اور سید محمد صادق صدر کے ساتھ بھی ایران کے گہرے تعلقات تھے.

انہوں نے کہا کہ ایرانی قیادت کے مقتدیٰ صدر کے ساتھ تعلقات بہت اچھے ہیں اور جہاں تک میرے علم میں ہے ایرانی پاسداران انقلاب کے کمانڈر قدس کور جنرل قاسم سلیمانی بھی مقتدیٰ صدر کے مداح ہیں.

ایرانی سفیر نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران عراقی انتخابات کے نتائج کا خیرمقدم کرتے ہوئے عراق قوم کے ووٹ اور ان کے انتخابت کا مکمل احترام کرتا ہے.

تفصیلات کے مطابق، عراق میں ہونے والے انتخابات کے نتائج میں عراق میں امریکہ کی موجودگی کے سب سے بڑے مخالف مقتدیٰ الصدر کی جماعت استقامہ، عراق کی کمیونسٹ پارٹی اور دیگر 5 سیکولر نظریات کی حامل جماعتوں پر مشتمل سائرون نامی انتخابی اتحاد نے انتخابات میں واضح برتری حاصل کرلی.

عراق میں ووٹوں کی گنتی کے بعد ہادی العامری کا ’فتح‘ نامی اتحاد دوسرے جبکہ موجودہ وزیراعظم کی حیدرالعبادی کا ’نصر‘ نامی انتخابی اتحاد تیسرے نمبر پر رہا.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@