امریکہ من گھڑت الزامات کے ذریعے افغان قوم کو دھوکہ دے رہا ہے: ایران

تہران، 21 مئی، ارنا – اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ امریکی عسکری قیادت ایران پر طالبان کی حمایت کرنے کا الزام لگا کر افغانستان میں جنگ کی اصل وجوہات سے متعلق افغان عوام کو دھوکہ دی رہی ہے.

یہ بات ترجمان دفترخارجہ بہرام قاسمی نے پیر کے روز تہران میں اپنی ہفتہ وار پریس بریفنگ میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتائی.

انہوں نے مزید کہا کہ افغانستان میں موجود امریکی کمانڈر طالبان کی حمایے سے متعلق ایران پر الزامات لگارہے ہیں جبکہ اس اقدام کا واحد مقصد افغانستان میں عوامی رائے عامہ کو دھوکہ دینا ہے.

قاسمی نے کہا کہ گزشتہ ہفتہ طالبان نے افغان صوبے فرح میں متعدد حملے کئے اور بدقسمتی سے اس صورتحال کے بعد افغانستان میں بعض حلقوں نے ایران پر طالبان کی حمایت کرنے کا الزام لگادیا.

انہوں نے کہا کہ امریکی کمانڈرز جو بہت سالوں سے افغانستان میں فوجی موجودگی اور لاکھوں نہتے اور معصوم افراد کے قتل عام کے بعد اس ملک میں سیکورٹی قائم اور برقرار رکھنے میں ناکام رہے ہیں اب وہ پڑوسی ممالک سمیت ایران پر طالبان کی حمایت کرنے کا الزام لگانے کے ساتھ عوام کی رائے کو افغانستان میں جنگ کی اصل وجہ( امریکہ کی موجودگی) سے منحرف کرنا چاہتے ہیں.

انہوں نے ایران اور افغانستان کے درمیان بڑھتے ہوئے روابط کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران4 دہائیوں سے زائد افغان قوم اور حکومت کے ساتھ کھڑا ہے اور ہمیشہ اس ملک کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کا دفاع کر رہا ہے.

قاسمی نے ایران اور افغانستان کے مابین پانی مسائل کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک پانی سے متعلقہ مسائل کو سفارتی مذاکرات کے ذریعے حل کر رہے ہیں.

انہوں نے مزید بتایا کہ پانی مسئلے کو افغانستان کے اندرونی معاملات سے منسلک کرنا بالکل عقلانی اور منطقی نہیں ہے.

قاسمی نے افغانستان میں تشدد کے استعمال کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ایران گزشتہ کی طرح افغان امن عمل کی مکمل حمایت کے علاوہ تنازعات کی جماعتوں کو مذاکرات کے ذریعے مسائل کو حل کرنے کی دعوت دیتا ہے.

9410*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@