ٹرمپ جوہری معاہدے سے علیحدگی کے نتایج کا ذمے دار ہے : برطانوی سفیر

لندن،20 مئی، ارنا - ایران میں تعینات برطانیہ کے سابق سفیر 'ریچرڈ ڈالتن' نے ایران جوہری معاہدے سے امریکہ کی دستبرداری کے رد عمل میں کہا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ اپنے فیصلے کے زمہ دار ہوں گے.

یہ بات انہوں نے ارنا کے نمائندے سے بات چیت کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر ایران جوہری معاہدے کی اہمیت پر روشنی ڈالتے ہوئے انہوں نے کہا جرمن کے چانسلر برطانیہ کے وزیر اعظم اور فرانس کے صدر نے بھی خطے کے امن و امان کی صورت حال کے پیش نظر اس معاہدے کی مکمل حمایت کا اعلان کیا ہے.

برطانیہ کے سابق سفارتکار نے کہا جب اسلامی جمہوریہ ایران جوہری معاہدے کے تمام شقوں پر عمل درآمد کررہا ہے تو اس معاہدے سے نکلنے کے عمل نادرست اور بڑی غلطی ہے.

یورپی یونین پر ہونے والے نقصانات کا جایزہ لیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے سے دستبرداری اور اس کو توڑنے کے عمل سے یورپی یونین کو بڑا نقصان ہوگا جس کی وجہ سے خطے اور دنیا پھر ناامنی کا شکار ہوجائیں گے.

انہوں نے ٹرمپ کے ایران دشمن پالیسیوں پر نقطہ چینی کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی صدر ایران کے خلاف اپنی پالیسیوں کے ذریعہ دنیا کو تشویش میں مبتلا کرنا چاہتے ہیں.

برطانیہ کے سابق سفارتکار نے مزید کہا کہ ایران پر مزید دباؤ کا نتائج نقصان دہ ہوگا جس سے کسی فریق کو فائدہ نہیں ہوگا.

انہوں نے ایران کے حوالے سے امریکہ اور برطانیہ کے درمیان اختلافات کا ذکر کرتے ہوئے کہا برطانیہ کی حکومت سمجھتی ہے کہ ایرانی جوہری معاہدے دنیا کو ایک صحیح سمت پر لے جارہے ہیں لیکن سیاسی مقاصد کے لئے امریکہ ایران پر دباؤ بڑھانا چاہتا ہے.

'ریچرڈ ڈالتن' نے مزید کہا برطانیہ اور امریکہ کی اقتصادی مفادات میں واضح فرق نظر آرہا ہے جس کی وجہ سے برطانیہ اور دیگر یورپی ممالک اپنی اقتصادی مفادات کو امریکہ پر ترجیح دیتے ہیں.

انہوں نے یورپی ممالک کا ایران جوہری معاہدے کے حوالے سے ہونے والے فیصلوں اور ان کے نتایج پر اپنا اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر اسلامی جمہوریہ ایران جوہری معاہدے پر اپنا عمل درآمد جاری رکھے تو یقینا یورپی ممالک کی بھی کوشش ہوگی تا کہ ایران کے مفادات بھی ملحوظ خاطر رکھا جائیں.

برطانیہ کے سابق سفارتکار نے ایرانی وزیر خارجہ کی یورپی یونین کے تین اہم ممالک کے وزرائے خارجے کی حالیہ ملاقاتوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ یورپی ممالک کو ایران جوہری معاہدے سے علیحدگی پر مجبور نہیں کیا جا سکتا.

'ریچرڈ ڈالتن' نے مزید کہا کہ امریکہ سے دنیا کے دوسرے ممالک کے ساتھ روابط بہت پیچیدہ ہوگيا ہے جس کی وجہ سے بہت سا مسائل اور مشکلات جنم لے رہا ہے.

1*271**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@