ایران اور یورپی مرکزی بینکوں کے درمیان تعلقات کا سلسلہ جاری ہے: چیف ایرانی بینک

تہران، 20 مئی، ارنا – ایرانی مرکزی بینک کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران اور یورپی مرکزی بینکوں کے درمیان دوطرفہ تعلقات قائم ہے اور ایرانی حکام یورپی یونین کے ساتھ مذاکرات کی بناپر فیصلہ کریں گے.

یہ بات 'ولی اللہ سیف' نے بعض میڈیا کے ڈائریکٹر جنرل اور مواصلات کے ماہرین کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے جوہری معاہدے سے امریکہ کی ایک فریقی علیحدگی کو ایران کے لئے کم لاگت کا طریقہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ جوہری معاہدے میں ایران شامل رہنے کے لئے ایران اور یورپ کے درمیان مذاکرات جاری ہے جس میں دوطرفہ بینکاری تعلقات کا جائزہ لیا جا رہا ہے.

یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ ہفتے ایک بار پھر ایران اور جوہری معاہدے کے خلاف پرانے الزامات کو دہرا کر اس معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی کا اعلان کردیا تھا.

ٹرمپ نے ایران کے خلاف پرانی ہرزہ سرائیوں کو دہراتے ہوئے کہا کہ وہ ایران پر دوبارہ پابندیاں لگانے کے حکم نامے پر دستخط کریں گے.

ٹرمپ کی علیحدگی کے ردعمل میں یورپی ممالک نے کہا کہ وہ ایران جوہری معاہدے پر قائم رہیں گے.

صدر اسلامی جمہوریہ ایران ڈاکٹر حسن روحانی نے بھی ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے جوہری معاہدے سے علیحدگی کے اعلان کے ردعمل میں کہا کہ آج سے یہ معاہدہ ایران اور اس پر دستخط کرنے والے 5 فریقین کے درمیان رہے گا.

انہوں نے ایرانی قوم کو اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ اگر موجودہ صورتحال میں ہمارے قومی مفادات کو تحفظ نہ ملے تو وہ ایک بار پھر قوم سے خطاب کرتے ہوئے ریاست اور حکومت کے تعمیری فیصلوں سے آگاہ کریں گے.

9393**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@