اسلامی ممالک صہیونی جرائم کا جواب دیں: روحانی

تہران، 17 مئی، ارنا - صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے مسلم ریاستوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ترکی میں ہونے والے غیرمعمولی اجلاس کے موقع پر قابض صہیونی ریاست کے حالیہ سنگین جرائم کا موثر انداز میں جواب دیں.

یہ بات ڈاکٹر 'حسن روحانی' نے جمعرات کے روز قطر کے امیر 'شیخ تمیم بن حمد آل ثانی' کے ساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر صدر روحانی نے قطری امیر کو رمضان المبارک کے مہینے کی آمد پر مبارکباد پیش کی.

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران قطری عوام اور حکومت کو گھیرے میں لینے کی شدید مخالفت کرتے ہوئے اس اقدام کو غیرمنصفانہ سمجھتا ہے.

ڈاکٹر روحانی نے کہا کہ قطر ہمارا دوست اور برادر ملک ہے جس کے ساتھ ہم تمام شعبوں میں تعلقات کی توسیع کا خیرمقدم کرتے ہیں.

ایران جوہری معاہدے سے الگ ہونے کے امریکہ کے یکطرفہ اقدام کا ذکر کرتے ہوئے ایرانی صدر نے مزید کہا کہ امریکی علیحدگی میں نہ تو کوئی مصلحت ہے اور نہ ہی اس میں ایران کے ساتھ مذاکرات کرنے والی فریقین کا فائدہ ہے.

انہوں نے کہا کہ ہمیں اس بات پر خوشی ہے کہ آج دنیا کے اکثر ممالک امریکی فیصلے کو نامنظور قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی ہے.

قطری امیر نے خطی مسائل بالخصوص قطر کے بحران سے متعلق اسلامی جمہوریہ ایران کے تعمیری مؤقف کو سراہتے ہوئے کہا کہ ان کا ملک ایران کے ساتھ تعلقات کو مزید بڑھانے کا خواہاں ہے.

شیخ تمیم بن حمد آل ثانی نے مقبوضہ فلسطین میں امریکی سفارتخانے کی بیت المقدس منتقلی کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ استنبول میں ہونے والے آئندہ اسلامی سربراہوں کے غیرمعمولی اجلاس مسئلہ فلسطین سمیت علاقائی بحرانوں پر مشترکہ گفتگو کرنے کے لئے اہمیت کا حامل ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@