جوہری معاہدہ: امریکی علیحدگی سے دنیا میں پُرامن باہمی بقائے خطرے میں پڑ گیا: ہسپانوی اخبار

میڈرڈ، 17 مئی، ارنا - ہسپانوی اخبار لا رازون (La Razón) میں شائع ہونے والے کالم نگار 'کاسٹرو ڈیس' کے ایک مضمون کے مطابق، ایران جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی کی وجہ سے دنیا میں پُرامن باہمی بقائے پر سنگین اثرات مرتب ہوں گے.

کاسٹرو ڈیس نے اپنے اس مضمون میں مزید کہا ہے کہ جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی نہ صرف عالمی برادری کے لئے منفی ثابت ہوگی بلکہ بدقسمتی سے جلد یا قریب مستقبل میں دنیا میں پُرامن باہمی بقائے پر سنگین اثرات مرتب ہوں گے.

کالم نگار نے مزید کہا کہ بات یہ نہیں کہ غلط فیصلہ اٹھایا گیا ہے بلکہ حقیقت تو یہ ہے کہ یہ فیصلہ عالمی معیار اور ضوابط کے مطابق نہیں ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ متعدد عالمی جوہری ادارے بالخصوص بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی نے متعدد بار ایران کی شفاف کارکردگی کی تصدیق کرچکے ہیں. مختلف ممالک بھی اس حوالے سے ایران کے ساتھ تعاون کے خواہاں ہیں مگر ان تمام صورتحال کے باوجود امریکہ اپنے وعدوں کی مسلسل خلاف ورزی کررہا ہے.

کاسٹرو ڈیس نے کہا کہ ایران جوہری معاہدے سے نکلنے کے ساتھ امریکہ نے مقبوضہ فلسطین میں اپنے سفارتخانے کو بیت المقدس منتقل کردیا جبکہ ایسے اقدامات سے خطے میں قیام امن و سلامتی کو یقینی نہیں بنایا جاسکتا.

کالم نگار کے مطابق، امریکہ علیحدگی کا فیصلہ سراسر غلط تھا اور امریکہ نے سعودی اور صہیونیوں کے ایما پر ایسا قدم اٹھایا. ٹرمپ انتظامیہ غلط پوزیشن پر کھڑی ہے لہذا امریکی حکومت چاہئے تسلیم کرے یا نہیں مگر اس کا غلط فیصلہ دنیا کے لئے تباہ کن ثابت ہوگا.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@