کو‏‏ئی ملک ایرانی قوم کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور نہیں کر سکتا ہے: روحانی

تہران، 16 مئی، ارنا – ایرانی صدر مملکت نے کہا ہے کہ کو‏‏ئی ملک اپنی سازشوں کےساتھ ایرانی قوم کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور نہیں کر سکتا ہے.

یہ بات ڈاکٹر حسن روحانی' نے آج بروز بدھ تہران میں ایرانی کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے ماہ مبارک رمضان کی آمد پرایرانی قوم سمیت دنیا بھرکے مسلمانوں کو ماہ رمضان کی مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ایران کے عوام امریکہ سمیت دوسرے ممالک کی سازشوں اور عزائم کے سامنے مزاحمت کرتے ہیں.

انہوں نے خطے میں ناجائز صہیوںی ریاست اور امریکہ کے غیر قانونی اور اقدامات خاص طور پر 14 مئی کو امریکی سفارتخانے کی تل ابیب سے بیت المقدس سے منتقلی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ اور اسرائیل سوچتے ہیں کہ فلسطینی عوام پر دباو ڈالنے کے ساتھ اس قوم کو قانونی حق سے محروم کر سکتے ہیں جبکہ ایسا نہیں ہے اور یہ ان کی ایک بڑی غلطی ہے.

روحانی نے کہا کہ مسجد اقصی اور بیت المقدس امت مسلمہ کا قبلہ اول ہے اور تمام مسلمانوں اس کا احترام کرتے ہیں.

انہوں نے کہا کہ فلسطینی قوم نے70 سال مزاحمت کر دیا ہے اور ابھی بھی اپنی مزاحمت کو جاری رکھیں گے.

یاد رہے کہ امریکہ دسمبر 2017 کو القدس شریف کو صہیونی دارالخلافہ تسلیم کرنے پر فیصلہ کردیا اور 14 مئی کو اسرائیل کے فلسطین پر قبضے کی سالگرہ کے موقع پر 14 مئی 2018 میں تل ابیب سے بیت المقدس کو اپنے سفارتخانے کی منتقلی کردیا.

گزشتہ ہفتے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران اور جوہری معاہدے کے خلاف پرانے الزامات کو دہرا کر اس معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی کا اعلان کردیا تھا.

ٹرمپ نے ایران کے خلاف پرانی ہرزہ سرائیوں کو دہراتے ہوئے کہا کہ وہ ایران پر دوبارہ پابندیاں لگانے کے حکم نامے پر دستخط کریں گے.

ٹرمپ کی علیحدگی کے ردعمل میں یورپی ممالک نے کہا کہ وہ ایران جوہری معاہدے پر قائم رہیں گے.

صدر اسلامی جمہوریہ ایران ڈاکٹر حسن روحانی نے بھی ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے جوہری معاہدے سے علیحدگی کے اعلان کے ردعمل میں کہا کہ آج سے یہ معاہدہ ایران اور اس پر دستخط کرنے والے 5 فریقین کے درمیان رہے گا.

انہوں نے ایرانی قوم کو اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ اگر موجودہ صورتحال میں ہمارے قومی مفادات کو تحفظ نہ ملے تو وہ ایک بار پھر قوم سے خطاب کرتے ہوئے ریاست اور حکومت کے تعمیری فیصلوں سے آگاہ کریں گے.

9410*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@