ایران، غیرقانونی تارکین کی منصوبہ بندی کیلیے افغانستان کیساتھ باہمی تعاون بڑھانے پر تیار

تہران، 14 مئی، ارنا – ایرانی پولیس کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران، افغانستان کیساتھ بغیر قانونی دستاویزات کےتارکین کی منصوبہ بندی کیلیے باہمی تعاون بڑھانے کے لیے آمادہ ہے.

یہ بات بریگیڈیئر جنرل 'حسین اشتری' نے پیر کے روز ایران کے دورے پر آئے ہوئے افغان وزیر دفاع ' طارق شاه بہرامی' کے ساتھ ملاقات کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ ہمارے سامنے آنے والے چیلنجوں میں سے ایک غیرقانونی تارکین ہیں جس حوالے سے دونوں ممالک کے ضروری تعاون کی لازمی ہے.

انہوں نے بتایا کہ ایران کےعدلیہ اور پولیس اداروں میں ایرانی اور افغان شہریوں کے درمیان کوئی فرق نہیں ہے اور قانون سب کے لیے برابر ہوتا ہے.

انہوں نے ایرانی سپریم لیڈر کے حکم کہ، افغان طالب علم ایرانی اسکولوں میں تعلیم کر سکتے ہیں، کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ حکم دونوں ممالک کی اقوام کے درمیان دوستی اور اتحاد کی علامت ہے.

ایرانی جنرل نے دونوں ممالک کی مشترکہ سرحدوں کی سیکورٹی کی تقویت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک منشیات کی اسمگلنگ، منظم یافتہ جرائم اور دہشتگردی کی روک تھام کے لیے باہمی تعاون کو مزید فروغ دینا ناگزیر ہیں.

اس موقع میں افغان وزیر دفاع نے کہا کہ ہم اسمگلرز، منظم جرائم، منشیات، دہشتگردی گروپوں کے خلاف جنگ میں ایران کی حمایت کے خواہاں ہیں.

انہوں نے کہا کہ ہمیں دونوں اقوام کی سیکورٹی کی حفاظت کے لیے سرحدی علاقوں کی سیکورٹی کو فروغ دینا چاہیے.

9410٭274٭٭

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@