جوہری معاہدے میں ایرانی مفادات کے تحفظ کیساتھ اس میں شامل رہیں گے: صدر روحانی

تہران، 15 مئی، ارنا – اسلامی جمہوریہ صدر مملکت نے امریکی غیرعقلانی اقدام کے خلاف یورپی ممالک کے مزاحمت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ جوہری معاہدے میں ایرانی مفادات کے تحفظ کی صورت میں اس معاہدے میں شامل رہیں گے.

ان خیالات کا اظہار 'حسن روحانی' نے منگل کے روز تہران میں ایسٹونیا کی نئی سفیر 'مارین موتوس' کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا.

اس موقع پر انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان دیرینہ تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ایسٹونیا کے ساتھ سمیت سائنسی، ثقافتی اقتصادی اور سیاحتی شعبوں میں کثیرالجہتی تعلقات کو فروغ دینے کے لئے تیار ہے.

صدر روحانی نے عالمی برادری اور تنظیموں میں دونوں ممالک کے درمیان باہمی تعلقات کی اہمیت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ تجارتی اور اقتصادی شعبوں میں بہت سی صلاحیتیں موجود ہے جن سے استعمال کے لئے بھرپور کوششیں کی ضرورت ہے.

انہوں نے جوہری معاہدے سے امریکہ کے ایک فریقی نکل کر جانے اور یورپ کے محدود وقت کے حوالے سے کہا کہ اگر جوہری معاہدے میں ایران کے قومی مفادات کے تحفظ ہوئے تو اس معاہدے کو بچایا جا سکتا ہے.

ایرانی صدر نے کہا کہ امریکہ اپنے غیرقانونی اور غیرعقلانی اقدام میں دوسرے ممالک کے خلاف کاروائیوں کرکے لہذا یورپی یونین کو اس کے سامنے اٹھ کھڑا ہونا چاہیئے.

ایسٹونیا کی نئی سفیر نے جوہری معاہدے کے تحفظ پر زور دیا.

9393*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@