برطانیہ اور فرانس کا ایران جوہری معاہدے کو بچانے کیلئے عزم کا اظہار

تہران، 15 مئی، ارنا - فرانس اور برطانوی وزرائے خارجہ نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ان کے ممالک ایران جوہری معاہدے کو امریکی علیحدگی کے باوجود بچانے کے لئے متفق ہیں.

فرانسیسی نیوز ایجنسی کے مطابق، یہ بات فرانس کے وزیر خارجہ 'جان ایو لودریان' نے لندن میں اپنے برطانوی ہم منصب 'بورس جانسن' کے ساتھ ایک ملاقات کے بعد گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے مزید بتایا کہ ہم باہمی اتحاد اور مضبوط ارادے کے ساتھ اس معاہدے کو زندہ رکھنا چاہتے ہیں.

انہوں نے ایران، جرمنی اور برطانیہ کے ہم منصبوں کے ساتھ اپنی آج ملاقاتوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایک عالمی معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی کا مطلب یہ نہیں ہے کہ یہ بین الاقوامی معاہدہ کھوکھلاپن اور بے ہودہ ہے.

لودریان نے کہا کہ جوہری معاہدے کی بنیاد جیت- جیت پر مبنی ہے اور جب تک ایران اس معاہدے پر پابند رہے ہم بھی اس عالمی ایٹمی معاہدے پر پابند رہیں گے.

گزشتہ ہفتے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران اور جوہری معاہدے کے خلاف پرانے الزامات کو دہرا کر اس معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی کا اعلان کردیا تھا.

ٹرمپ نے ایران کے خلاف پرانی ہرزہ سرائیوں کو دہراتے ہوئے کہا کہ وہ ایران پر دوبارہ پابندیاں لگانے کے حکم نامے پر دستخط کریں گے.

ٹرمپ کی علیحدگی کے ردعمل میں یورپی ممالک نے کہا کہ وہ ایران جوہری معاہدے پر قائم رہیں گے.

صدر اسلامی جمہوریہ ایران ڈاکٹر حسن روحانی نے بھی ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے جوہری معاہدے سے علیحدگی کے اعلان کے ردعمل میں کہا کہ آج سے یہ معاہدہ ایران اور اس پر دستخط کرنے والے 5 فریقین کے درمیان رہے گا.

انہوں نے ایرانی قوم کو اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ اگر موجودہ صورتحال میں ہمارے قومی مفادات کو تحفظ نہ ملے تو وہ ایک بار پھر قوم سے خطاب کرتے ہوئے ریاست اور حکومت کے تعمیری فیصلوں سے آگاہ کریں گے.

9410*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@