ٹرمپ صہیونیوں کا آلہ کار ہے: سابق امریکی عہدیدار

نیویارک، 12 مئی، ارنا – امریکی وزیر دفاع کے سابق مشیر نے ٹرمپ کو اسرائیل کا آلہ کار قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایران جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی جابر صہیونیوں کی مزید گستاخی کا باعث بن گئی ہے.

یہ بات جنرل 'رابرٹ جی گارڈ' نے ہفتہ کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ جابر صہیونی وزیر اعظم نیتن یاہو کی جانب سے اسلامی جمہوریہ ایران اور شام کے خلاف ظالمانہ پالیسیوں کے نفاذ کی وجہ وائٹ ہاؤس کی مکمل حمایت ہے.

جی گارڈ نے عالمی معاہدوں میں امریکی خلاف ورزیوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایران علاقے میں ایک طاقتور ملک ہے اور اس ملک کی جانب سے اپنے مفادات کو چھوڑ کرنا اور علاقے سے باہر نکل جانا ٹرمپ کی خام سوچ ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی نئی حکومت کو دستخط ہونے والے سابق معاہدوں کو بدل نہیں کرنا چاہیئے اور ٹرمپ نے امریکہ کے قومی مفادات کو نظر انداز کرنے کے ساتھ ایران جوہری معاہدے سے نکل جانے پر فیصلہ کیا.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ٹرمپ کے ایسے اقدام اپنے اتحادیوں سے دوری اور عالمی حیثیت کی تباہی کا باعث ہوگیا لہذا ان کا اقدام کبھی بھی قابل قبول نہیں ہے.

سابق پینٹاگون اہلکار نے کہا کہ ایران کے ساتھ تعلقات قائم کرنے والے ممالک سمیت جرمنی، فرانس اور برطانیہ کے خلاف پابندیاں ‏عائد کرنے کے ساتھ واشنگٹن بڑے مسائل اور مشکلات کا شکار ہوجائے گا.

انہوں نے ناجائز صہیونی ریاست کی جانب سے ایران پر جوہری معاہدے کی خلاف ورزی کے الزام کو مسترد کرتے ہو‏ئے کہا کہ ٹرمپ نیتن یاہو کے آلہ کار بن گیا اور اس کے بے بنیاد بیانات کے مطابق فیصلہ کر رہا ہے.

جنرل جی گارڈ نے کہا کہ جابر صہیونی وزیر اعظم کا ایران مخالف من گھڑت الزامات ایران جوہری معاہدے کی بھرپور اہمیت کی علامت ہے.

انہوں نے ایران کے خلاف صہیونیوں کی ظالمانہ پالیسیوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ان کی ایسی پالیسی کی وجہ ٹرمپ کی مکمل حمایت ہے جو ہمیں اسے دوری کرنا چاہیئے.

انہوں نے کہا کہ ایرانی میزائل پروگرام اور جوہری معاہدے کے درمیان کوئی تعلق موجود نہیں ہے اور ٹرمپ کی جانب سے خطے میں ایران کی کمزوری کے لئے کوششیں ناکام ہوجائیں گی.

انہوں نے کہا کہ ٹرمپ چاہتا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران میزائل پروگرام اور مشرق وسطی میں اپنے تعمیری کردار کو چھوڑ دے کر مگر ایک ناممکن خواہش ہے کیونکہ ایران ایک طاقتور ملک ہے.

یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے منگل کی رات ایک بار پھر ایران اور جوہری معاہدے کے خلاف پرانے الزامات کو دہرا کر اس معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی کا اعلان کردیا.

9393*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@