یورپی ممالک سمیت چین،روس اور ایران جوہری معاہدے کی حفاظت کریں: سولانا

میڈرڈ،10 مئی، ارنا - یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سابق سربراہ نے ایک مشہورجریدہ 'آل پائس' میں ایک کالم میں ڈونلڈ ٹرمپ کے ایرانی جوہری معاہدے سے رویگردانے پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے یورپی ممالک اور اریان سے کہا ہے کہ وہ اس معاہدے کی حفاظت کے لئے اپنی بھرپور کوشش کریں.

'ہاویار سولانا' نے لکھا ہے کہ امریکی صدر نے خارجہ پالیسی میں بہت سا احمقانہ اقدام کیا ہے لیکن ایران کے جوہری بین الاقوامی معاہدے سے دستبرداری ان کا سب سے زیادہ احمقانہ اقدام ہے.
انہوں نے مزید کہا ایران کے جوہری معاہدے کئی سال کی سخت اور انتھک محنت اور کوششوں سے حاصل ہوئے ہیں جس کی وجہ سے اس کو بین الاقوامی سفارتکاری کا فتح بھی قرار دیا جا تا ہے اس معاہدے کو میں نے ہی شروع کیا تھا جس کی وجہ سے مجھے اس معاہدے کی اہمیت کے بارے میں بہت کچھ جانتا ہوں لیکن ٹرمپ نے اس اہمیت کے حامل معاہدے کو اسانی سے پھاڑدیا جو قابل مذمت ہے.
انہوں نے اپنے کالم میں لکھا کہ صرف بین الاقوامی جوہری ادارے ہی ایرانی جوہری معاہدے کے حوالے سے اپنا موقف پیش کرسکتا ہے ٹرمپ کو اس بین الاقوامی معاہدے کو توڑنے کا حق حاصل نہیں تھا.
یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سابق سربراہ نے مزید کہا کہ کیوںکہ بارک اوباما کی دور حکومت میں ہی ایرانی جوہری معاہدے نافذ ہوا تھا تو اس لئے ٹرمپ کو یہ چیر پسند نہیں تھا.
انہوں نے مزید کہا امید ہے کہ یورپی ممالک کے ساتھ ساتھ اسلامی جمہوریہ ایران بھی سیاسی شعور اور بلوغ کا مظاہرہ کرتے ہوئے اس بین الاقوامی معاہدے کو ختم ہونے سے بچائیں.
1*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@