جوہری معاہدے کے تحت ایرانی مفادات کو یقینی بنانا ہوگا: صدر روحانی

تہران، 10 مئی، ارنا - صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ یورپی فریقین کے پاس وقت بہت محدود ہے لہذا انہیں چاہئے کہ جوہری معاہدے کے تحت ایرانی مفادات کے ہر صورت میں تحفظ کو یقینی بنائیں.

یہ بات ڈاکٹر 'حسن روحانی' نے گزشتہ شام فرانس کے صدر 'ایمانوئیل میکرون' کی جانب سے کئے جانے والے ٹیلی فونک رابطے میں دوطرفہ تعلقات کے فروغ، جوہری معاہدہ اور امریکہ کے متنازعہ فیلصوں پر تبادلہ خیال کیا.
صدر روحانی نے مزید کہا کہ یورپی ممالک کے پاس ایران جوہری معاہدے کے مکمل نفاذ اور اپنے وعدے نبھانے سے متعلق وقت بہت کم ہے.
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ جوہری معاہدے میں ایران کے مفادات کو واضح اور مکمل طور پر یقینی بنانا ہوگا اور ہمیں اس کی ضمانت دینی ہوگی.
ایرانی صدر نے کہا کہ جوہری معاہدہ 2003 سے لے کر 2015 تک کی جانے والی جد و جہد اور کوششوں کے نتیجے میں حاصل ہوا ہے جس کی اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے توثیق کی اور اب یہ ایک عالمی معاہدہ ہے.
انہوں نے جوہری معاہدے کے خلاف ڈونلڈ ٹرمپ کی ہرزہ سرائیوں پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ امریکی صدر کے دعووں کے برعکس ایران میں سینٹری فیوجز کی توسیع کا مقصد جوہری ھتھیار تیار کرنے کے لئے نہیں بلکہ سائنسی اور تکنیکی شعبوں میں ملکی قابلیت میں اضافہ کرنا ہے.
اس موقع پر فرانسیسی صدر نے ڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ فیصلے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے یورپ، ایران جوہری معاہدے کے تحفظ اور اس کے مکمل نفاذ کے لئے کوشاں ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ یورپی ممالک نے متفقہ طور پر ڈونلڈ ٹرمپ سے امریکہ کی جوہری معاہدے سے علیحدگی پر احتجاج کیا ہے.
یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ بدھ رات ایک بار پھر ایران اور جوہری معاہدے کے خلاف پرانے الزامات کو دہرا کر اس معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی کا اعلان کردیا تھا.
ٹرمپ نے ایران کے خلاف پرانی ہرزہ سرائیوں کو دہراتے ہوئے کہا کہ وہ ایران پر دوبارہ پابندیاں لگانے کے حکم نامے پر دستخط کریں گے.
صدر اسلامی جمہوریہ ایران ڈاکٹر حسن روحانی نے بھی ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے جوہری معاہدے سے علیحدگی کے اعلان کے ردعمل میں کہا کہ آج سے یہ معاہدہ ایران اور اس پر دستخط کرنے والے 5 فریقین کے درمیان رہے گا.
انہوں نے ایرانی قوم کو اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ اگر موجودہ صورتحال میں ہمارے قومی مفادات کو تحفظ نہ ملے تو وہ ایک بار پھر قوم سے خطاب کرتے ہوئے ریاست اور حکومت کے تعمیری فیصلوں سے آگاہ کریں گے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@