امریکی کی ایٹمی معاہدے سے علیحدگی: پاکستان کا اظہار تشویش

اسلام آباد، 10 مئی، ارنا - حکومت پاکستان نے ایران جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس فیصلے سے معاملہ سلجھانے کی کوششوں کو ٹھیس پہنچے گی.

امریکہ کے ایران جوہری معاہدے سے الگ ہونے کے معاملے پر پاکستانی دفترخارجہ نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ معاہدہ ختم کرنے سے معاملہ سلجھانے کی عالمی برادری کی کوششوں کو ٹھیس پہنچے گی.

امریکہ کے ایران سے ایٹمی معاہدے سے الگ ہونے کے معاملے پر ردعمل دیتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ 'محمد فیصل' نے کہا کہ امریکہ کی جانب سے 2015 کے ’مشترکہ جامع پلان آف ایکشن‘ سے الگ ہونے سے تنازع کے حل کے لیے کیا جانے والا مذاکراتی عمل اور سفارتکاری پر اعتماد کمزور ہوگا.

انہوں نے مزید کہا کہ تاہم امریکہ کی علیحدگی کے باوجود دیگر فریقین ابھی بھی معاہدے پر کاربند رہنے کیلئے رضامند ہیں اور پاکستان کو امید ہے کہ برطانیہ، فرانس، جرمنی، چین اور روس معاہدے پر عملدرآمد کے لیے کوئی راہ نکالیں گے.

ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے ایران اور عالمی قوتوں کے درمیان معاہدے کا خیر مقدم کیا تھا، جبکہ جوہری عدم پھیلاؤ کی عالمی ایجنسی (آئی اے ای اے) نے بھی ایران کی جانب سے معاہدے پر عملدرآمد پر اطمینان کا اظہار کیا ہے.

واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ گزشتہ دنوں نے ایران مخالف پرانے الزامات کو دہراتے ہوئے سابق امریکی صدر براک اوباما کی جانب سے کیے گئے جوہری معاہدے سے دستبردار ہونے کا اعلان کیا تھا.

واشنگٹن میں اپنے خطاب میں ٹرمپ نے کہا کہ امریکہ نے ایران کے ساتھ ہونے والے عالمی جوہری معاہدہ سے دستبراد ہونے کا فیصلہ کر لیا ہے اور امریکہ پابندیاں دوبارہ بحال کرے گا.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@