ٹرمپ کا فیصلہ بڑی غلطی تھی: صدر برطانوی ایوان تجارت

لندن، 9 مئی، ارنا – برطانوی ایوان تجارت کے سربراہ نے ایران جوہری معاہدے سے امریکہ کی عیلحدگی پر اپنے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹرمپ کا فیصلہ بڑی غلطی تھی.

یہ بات 'نورمن لامونٹ' نے آج بروز بدھ ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے عالمی ایٹمی توانائی ادارے کی جانب سے ایران کی دیانتداری کی تصدیق کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے کبھی بھی ایران کے ساتھ دوطرفہ تعلقات کو بہتر بنانے کے لئے اس معاہدے کے مواقع سے فائدہ نہیں اٹھایا.
لامونٹ نے کہا کہ یورپ امریکہ کے برعکس جوہری معاہدے کے تحفظ کے لئے پر عزم ہے.
انہوں نے ٹرمپ کی جانب سے پابندیوں کی تجدید کے ساتھ ایران اور یورپ کے درمیان تجارتی تعلقات کی سختی پر انتباہ کرتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ اگر ایران ٹرمپ کے فیصلے کے سامنے مناسب انداز سے جواب دئے تو یورپ میں اس معاہدے کے خواہاں افراد تجارتی تعلقات کے تسلسل کے لئے کوشش کریں گے.
یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ رات ایک بار پھر ایران اور جوہری معاہدے کے خلاف پرانے الزامات کو دہرا کر اس معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی کا اعلان کردیا.
ٹرمپ نے ایران کے خلاف پرانی ہرزہ سرائیوں کو دہراتے ہوئے کہا کہ وہ ایران پر دوبارہ پابندیاں لگانے کے حکم نامے پر دستخط کریں گے.
صدر اسلامی جمہوریہ ایران ڈاکٹر حسن روحانی نے بھی ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے جوہری معاہدے سے علیحدگی کے اعلان کے ردعمل میں کہا کہ آج سے یہ معاہدہ ایران اور اس پر دستخط کرنے والے 5 فریقین کے درمیان رہے گا.
انہوں نے ایرانی قوم کو اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ اگر موجودہ صورتحال میں ہمارے قومی مفادات کو تحفظ نہ ملے تو وہ ایک بار پھر قوم سے خطاب کرتے ہوئے ریاست اور حکومت کے تعمیری فیصلوں سے آگاہ کریں گے.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@