جوہری معاہدہ: امریکی علیحدگی سے ایران کی سائنسی ترقی متاثر نہیں ہوگی: سربراہ بہشتی یونیورسٹی

تہران، 8 مئی، ارنا - ایران کی شہید بہشتی یونیورسٹی کے سربراہ نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے میں امریکہ کے شامل رہنے یا نہ رہنے سے ایران کی سائنسی ترقی میں کوئی خلل نہیں آئے گا.

یہ بات حسن صدوق نے ارنا کے نمائندے کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے ایرانی جوہری معاہدے سے ممکنہ امریکہ کی علیحدگی کے نتائج کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے : اگر امریکہ ایرانی جوہری معاہدے سے نکل جائے تو نئے اور جدید علمی آلات اور مشینری کے حصول کے لئے ایران کو مشکلات اور مسائل ضرور ہوگی لیکن پھر بھی ایرانی جوانوں اور نوجوانوں کی کوششوں سے اس کمی پر قابو پایا جاسکے گا.
انہوں نے ایران کے خلاف امریکی ہرزہ سرائیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ جوہری معاہدے میں امریکہ کی موجودگی اور عدم موجودگی دونوں ایران کے لئے ایک جسیا ہے اور ہم اپنے اندرونی وسائل اور ملک کے طلبہ اور طالبات کی صلاحیتوں سے ترقی کا سفر طی کرتے رہیں گے.
انہوں نے مزید کہا قطع نظر اس کے کہ کیا امریکہ جوہری معاہدے پر رہے گا یا نہیں ایران اور یورپی ممالک کی یونیورسٹیوں کے درمیان علمی اور تحقیقاتی تعاون اور تعلقات جاری رہے گی.
یاد رہے کہ امریکی صدر نے اعلان کیا ہے کہ وہ آج رات ایران کے جوہری معاہدے کے حوالے سے اپنا فیصلہ کا اعلان کریں گے.
1*271**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@