ٹرمپ اپنے فیصلے میں عالمی ردعمل کو بھی مد نظر رکھے: چینی ایلچی

تہران، 8 مئی، ارنا - چینی حکومت کے خصوصی ایلچی برائے امور مشرق وسطی نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ جو آج رات ایران جوہری معاہدے پر اپنے حتمی فیصلے کا اعلان کرنے والے ہیں، عالمی ردعمل کو بھی مد نظر رکھیں گے.

ان خیالات کا اظہار ایران کے دور پر آنے والے چینی ایلچی 'گونگ شیاؤ شنگ' نے منگل کے روز تہران میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ چین، ایران جوہری معاہدے کا تسلسل جاری رکھنے کا خواہاں ہے. اس حوالے سے ہمارا مؤقف واضح ہے اور ہمیں امید ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ عالمی برادری کے مطالبات کو مد نظر رکھتے ہوئے اپنے فیصلے کا اعلان کریں گے.
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ایران جوہری معاہدے سے بہتر کوئی اور معاہدہ نہیں. چین، ٹرمپ کے حتمی فیصلے کا انتظار کررہا ہے. اگر امریکی صدر علیحدگی پر فیصلہ کریں تو چین بھی عالمی ردعمل کو دیکھتے ہوئے بالخصوص اپنے اتحادیوں اور معاہدے کے دیگر فریقین کے ساتھ مشاورت کرنے کے بعد اس پر ردعمل دے گا.
ایران چین تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے شیاؤ شنگ نے کہا کہ ہمارے تعلقات جوہری معاہدے تک محدود نہیں بلکہ دونوں ممالک کے درمیان اہم معاہدے ہیں. چین، جوہری معاہدے کا پابند ہے اور اس متعلق اپنی ذمے داریوں پر عمل کرتا رہے گا.
انہوں نے اپنے دورہ کے حوالے سے بتایا کہ اس دورے کا مقصد ایرانی حکام کے ساتھ جوہری امور اور شام کی صورتحال پر تبادلہ خیال کرنا تھا. ایرانی حکام کے ساتھ ہونے والی ملاقاتوں کے نتائج اچھے ہیں.
اعلی چینی سفارتکار نے بتایا کہ ایران جوہری معاہدہ عالمی امن و سلامتی کے لئے اہم ہے لہذا ہماری کوشش ہے کہ اس معاہدے کا تسلسل جاری رکھیں.
انہوں نے مزید کہا کہ ہم شام میں تنازعات اور تشدد کے فوری خاتمے کے خواہاں ہیں. چین کی نظر میں مسئلہ شام کو سیاسی طریقوں سے حل کرنا ناگزیر ہے.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے 12 مئی کو ایران کے ساتھ جوہری معاہدے کی توثیق کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ کرنا تھا مگر انہوں نے گزشتہ رات اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ وہ آج اپنے حتمی فیصلے کا اعلان کریں گے.
دریں اثناء اعلی ایرانی قیادت نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی ممکنہ علیحدگی پر بھرپور ردعمل دیا جائے جس میں ایران کی بھی جوہری معاہدے سے علیحدگی اور این پی ٹی معاہدے سے نکلنا شامل ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@