حکومت تیل شعبے پر مزید خود انحصار کرنے کی حمایت کرے گی: ایرانی صدر

تہران، 8مئی، ارنا - ایران کے صدر نے کہا ہے کہ حکومت محکمہ تیل کی جانب سے تیل صنعت میں جدید ٹیکنالوجی کے استعمال اور اس شعبے کو خودکفیل بنانے سے متعلق تمام منصوبوں کی بھرپور حمایت کرے گی.

یہ بات ایرانی صدر مملکت ڈاکٹر 'حسن روحانی' نے آج بروز منگل تہران میں منعقدہ تیل، گیس، ریفائننگ اور پیٹرو کیمیکل نمائش کے دورے کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ تیل کی صنعت کے شعبے میں گھریلو کمپنیوں کو غیر ملکی کمپنیوں کے ساتھ ٹینڈر میں شرکت کرنی چاہئے.

روحانی نے ملکی نجی کمپنیوں کی مصنوعات کی خریداری اور ان کی سہولیات کی فراہمی کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اس شعبے میں روزگار اور سرمایہ کاری کے لیے مناسب مواقع فراہم کرنا بہت اہم ہے.

انہوں نے ایران کی اہم پالیسی دنیا بالخصوص پڑوسی ممالک کے ساتھ دوستی، بھائی چارے اور قریبی تعلقات بڑھانا ہے.

ایرانی صدر نے کہا کہ ایران نے آذربائیجان کے ساتھ سمندری گیس ذخائر کے فروغ کے لئے ایک معاہدے پر دستخط کئے اور آئندہ بھی ترکمانستان کے ساتھ ایسے معاہدے پر دستخط کرنا ممکن ہو سکتا ہے.

انہوں نے کہا کہ قریب مستقبل میں ایران کی جنوبی بندرگاہ 'جاسک' سے تیل کی برآمدات کا آغاز ہو جائے گی جس کو اسٹریٹجک اور سیاسی کے لحاظ سے خاص اہمیت کا حامل ہے.

ڈاکٹر روحانی نے کہا کہ تیل مکمل طور پر ایک اسٹریٹجک صنعت ہے جو ایران اور خطے کے کے لئے بہت قیمتی ہے.

تفصیلات کے مطابق، 23 ویں بین الاقوامی تیل، گیس، ریفائننگ اور پیٹرو کیمیکل نمائش صنعت کی نمائش 6 سے 9 مئی تک تہران میں جاری رہے گی جس میں 1053 ملکی اور 600 غیر ملکی کمپنیاں شریک ہیں.

9410٭272٭٭

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@