امریکہ، جوہری معاہدے کیخلاف قدم اٹھائے تو ایران اس کا سخت جواب دے گا: ظریف

تہران، 8 مئی، ارنا - ایران کے وزیر خارجہ نے امریکہ کو انتباہ کیا ہے کہ اگر وہ جوہری معاہدے کی خلاف ورزی کرے تو یقینا اسلامی جمہوریہ ایران کا جوابی ردعمل سخت ہوگا.

'محمد جواد ظریف' پیر کے روز ایرانی پارلیمنٹ کے خبرساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ امریکہ کی جوہری معاہدے سے ممکنہ علیحدگی کے ردعمل میں ایران کے پاس مختلف آپشنز موجود ہوں گے جو امریکہ کو پسند نہیں آئیں گے.

انہوں نے کہا کہ جیسا کہ ایرانی صدر نے گزشتہ روز اپنے خطاب میں کہا تھا، امریکہ کے منفی اقدامات کے جواب میں ایران شدید ردعمل دے گا.

ظریف نے مزید کہا کہ صدر مملکت کی جانب سے جوہری معاہدے کی خلاف ورزی کرنے والوں کو موثر جواب دینے کے لئے ضروری احکامات دئے گئے ہیں. ایران گروپ 1+5 کے دیگر فریقین بشمول یورپ کے ساتھ بھی اس حوالے سے رابطے میں ہے.

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی آئندہ حکمت عملی سے ملکی معیشت کو فائدہ ہوگا اور اس مقصد کے لئے موثر انداز میں اقدامات اٹھائے جائیں گے.

محمد جواد ظریف نے مزید کہا کہ امریکہ کی جوہری معاہدے سے ممکنہ علیحدگی سے یہ بات ظاہر ہوگی کہ وہ دنیا میں تنائی کا شکار ہے جس پر بھروسہ کرنا غلط فیصلہ ہوگا.

ظریف نے عالمی انسداد منی لانڈرنگ گروپ (FATF) اور ایران کی حکمت عملی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران کی جانب سے اس حوالے سے قانون سازی کا اصل مقصد عالمی سطح پر ملک دشمن عناصر کی سازشوں کا مقابلہ کرنا ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@