ایران جوہری معاہدہ: امریکہ کو اپنی غلطی کا جواب ملے گا: ظریف

تہران، 7 مئی، ارنا - ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران جوہری معاہدے سے متعلق اپنے مفادات کے مطابق فیصلہ کرے گا اور اگر امریکہ کوئی غلطی کرے تو ہم اس کا موثر انداز میں جواب دیں گے.

یہ بات 'محمد جواد ظریف' نے پیر کے روز جوہری معاہدے کے مستقبل پر تبصرہ کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ایران مناسب اقدامات اٹھائے ہیں، امریکہ کوئی فیصلہ کرے مگر ہم ان فیصلوں سے ایرانی قوم کی زندگی کو متاثر نہیں ہونے دیں اور اس حوالے سے ملکی حکام ہوشیار ہیں.
محمد جواد ظریف نے مزید کہا کہ یقینا ایٹمی سمجھوتے سے جو ایک عالمی معاہدہ سمجھا جاتا ہے، الگ ہونے سے امریکہ دنیا میں مزید تنہائی کا شکار ہوگا لہذا یہ اقدام عالمی مفاد میں بھی نہیں ہے.
انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے کے تحت اسلامی جمہوریہ ایران کے مفادات کو یقینی بنانا ہوگا دوسری صورت میں ہم امریکی اقتصادی دباؤ کے خلاف مناسب ردعمل دیں گے.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران کے پاس مختلف راستے ہیں، جوہری معاہدے سے نکلنا ان میں سے ایک آپشن ہے تاہم 12 مئی کو اس حوالے سے حتمی فیصلہ کیا جائے گا.
انہوں نے امریکہ کی جانب سے جوہری معاہدے کی ممکنہ تجدید پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران ٹرمپ کے فیصلے کا انتظار کرتا ہے.
انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اب تک اپنے وعدوں پر قائم اور عالمی سطح پر اہم کردار ادا کر رہا ہے جبکہ امریکی خلاف ورزی کا سلسلہ جاری ہے جس یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ امریکہ ناقابل بھروسہ ملک ہے.
انہوں نے کہا کہ ایسے اشتعال انگیز اقدامات سے امریکہ کی عالمی حیثیت متاثر ہوگی لہذا امریکی سیاسی قائدین کو چاہئے کے ایسے رویے پر نظرثانی کریں.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@