ایران، جوہری معاہدے کیخلاف امریکی عزائم کا مقابلہ کرے گا: ولایتی

تہران، 7 مئی، ارنا - سنیئر ایرانی رہنما نے کہا ہے کہ اگر امریکہ جوہری معاہدے سے ہٹنے کی کوشش کرے یا اس سے نکل جائے تو اسلامی جمہوریہ ایران اس کا بھرپور مقابلہ کرنے کے لئے آمادہ ہے.

یہ بات سپریم لیڈر کے خصوصی مشیر برائے بین الاقوامی امور 'علی اکبر ولایتی' نے تہران میں عالمی 31ویں کتاب میلے کے موقع پر صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران جوہری معاہدے سے متعلق کسی بھی صورتحال کا سامنا کرنے کے لئے آمادہ ہے اور اگر امریکی حکام ہمیں آزمانا چاہتے ہیں تو ہم تیار ہیں.
ولایتی نے کہا کہ اگر امریکہ جوہری معاہدے سے علیحدہ ہو یا ایرانی مفادات کے خلاف نئی سیاسی سازش کا آغاز کرے تو یقینا پر ہم اس کا منہ توڑ جواب دیں گے.
انہوں نے مسئلہ فلسطین کو خطی مسائل کی اصل وجہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ امریکی سفارتخانے کی تل ابیب سے بیت المقدس منتقلی کا ٹرمپ فیصلہ در اصل بالفور اعلامیے کی دوسری قسط ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ بدقسمتی سے 20ویں صدی کے ابتدا میں برطانیہ نے بعض علاقائی ممالک کے ساتھ مل کر فلسطین پر قبضہ جمانے کے لئے قابض صہیونیوں کی مدد کی.
علی اکبر ولایتی نے کہا کہ سعودی عرب، امریکی سفاتخانے کی بیت المقدس منتقلی کے حوالے سے ٹرمپ کے فیصلے کا ساتھ دے رہا ہے.
ایرانی سپریم لیڈر کے خصوصی مشیر نے کہا کہ القدس شریف تمام مسلمانوں کا قبلہ اول ہے، عالم اور بہادر فلسطینی قوم صہیونیوں کے خلاف اٹھ کھڑے ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ ناجائز صہیونی ریاست شام اور دوسرے علاقائی ممالک میں اپنی مداخلت پر مبنی سازشوں میں ناکام رہے گی.

9393*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@