آذربائیجان نے ایران کیخلاف جوہری دستاویزات فراہم کرنے کی افواہوں کو مسترد کردیا

باکو، 5 مئی، ارنا - جمہوریہ آذربائیجان نے اس ملک کے ذریعے ایران کے جوہری پروگرام کے خلاف دستاویزات کی فراہمی سے متعلق افواہوں کی سختی سے تردید کی ہے.

یہ بات آذری دفترخارجہ کے ترجمان 'حکمت حاجی اوف' نے ارنا نیوز ایجنسی کے نمائندے کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے بعض علاقائی ممالک کے میڈیا کی جانب سے شائع ہونے والی ان رپورٹس کو سختی سے مسترد کردیا جن میں یہ دعویٰ کیا گیا تھا کہ ناجائز صہیونی ریاست نے جمہوریہ آذربائیجان کی سرزمین کے ذریعے ایران کے جوہری پروگرام کے خلاف دستاویزات تک رسائی حاصل کی ہے.

ترجمان نے مزید کہا کہ آذربائیجان میں متعلقہ اداروں اس رپورٹ کا سنجیدگی سے جائز لیا جس کے بعد ہم واضح طور پر اعلان کرتے ہیں ایران کے خلاف جوہری دستاویزات کی فراہمی میں آذربائیجان کی سرزمین کے استعمال کی خبریں جھوٹی اور بے بنیاد ہیں.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ کویتی اخبار الجریدہ نے دعویٰ کیا ہے کہ ناجائز صہیونی ریاست نے رواں سال کے جنوری میں ایران کے جوہری سرگرمیوں سے متعلق دستاویزات کو آذربائیجان کے سرحدی علاقے تک پہنچایا اور وہاں سے بذریعے ہوائی جہاز مقبوضہ فلسطین (اسرائیل) تک لایا.

یاد رہے کہ صہیونی وزیراعظم نے گزشتہ دنوں نام نہاد 'خفیہ ایٹمی فائلیں' افشا کی تھیں جس میں دعوی کیا گیا تھا کہ ایران نے خفیہ طور پر ایٹمی ہتھیار بنانے کی کوشش کی تھی.

نیتن یاہو نے یہ دعویٰ کیا تھا کہ اسرائیل نے ہزاروں ایسی دستاویزات حاصل کی ہیں جن سے ظاہر ہوتا ہے کہ ایران نے دنیا کو یہ کہہ کر دھوکہ دیا کہ اس نے کبھی بھی ایٹمی ہتھیار بنانے کی کوشش نہیں کی.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@