یمن میں بحران کا خاتمہ ایران کی پہلی ترجیح ہے: جابری انصاری

روم، 4 مئی، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور نے کہا ہے کہ یمن میں جاری بحران کے خاتمے کے لئے کوششوں کو جاری رکھنا اسلامی جمہوریہ ایران کی علاقائی پالیسی کی پہلی ترجیح ہے.

یہ بات 'حسین جابری انصاری' نے اطالوی دارالحکومت روم کے سرکاری دورے کے موقع پر ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
سنیئر ایرانی سفارتکار ایک وفد کی سربراہی میں اٹلی کے دورے پر ہیں جس کا مقصد چار یورپی ممالک کے ساتھ یمنی بحران پر مذاکرات کرنا ہے.
انہوں نے ارنا نیوز ایجنسی کو بتایا کہ اطالوی، جرمن، فرانسیسی اور برطانوی حکام کے ساتھ یمنی بحران پر تفصیلی گفتگو ہوئی. اس نشست کا مقصد ایران کی جانب سے یمن میں بحران کے خاتمے کے لئے کوششوں میں اضافہ کرنا ہے.
جابری انصاری نے مزید کہا کہ یورپی نمائندوں کے ساتھ یمن سے متعلق سیاسی، عسکری اور انسانی صورتحال پر تعمیری مذاکرات ہوئے. ہمیں امید ہے کہ اس نشست میں طے پانے والے معاہدوں پر عمل کرتے ہوئے یمنی بحران کے خاتمے کےلئے موثر اقدامات اٹھائے جائیں.
اعلی ایرانی سفارتکار نے کہا کہ یمن کی موجودہ صورتحال تشویشناک ہے، وہاں انسانی بحران کا نیا المیہ ظاہر ہورہا ہے جس کی وجہ سے یمنی عوام کی خاموشی سے اموات ہورہی ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ یورپی حکام کے ساتھ یمن سے متعلق مذاکرات کا پہلا دور میونخ میں جبکہ دوسرا دور روم میں منعقد ہوا اور یہ اتفاق کیا گیا ہے کہ ان مذاکرات کا تیسرا دور ماہ رمضان کے بعد جون میں بروسلز میں منعقد ہوگا جس کی میزبانی یورپی یونین کرے گی.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@