تمام ممالک کو پُرامن جوہری ٹیکنالوجی کے استعمال کا حق ہے: ایران

ویانا، 3 مئی، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے جوہری ھتھیار رکھنے والے ممالک کے دہرے معیار پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پُرامن جوہری ٹیکنالوجی کے استعمال تمام ممالک کا حق ہے جسے نظرانداز نہیں کیا جاسکتا.

یہ بات عالمی جوہری توانائی ادارے میں تعینات ایران کے مستقل مندوب 'رضا نجفی' نے این پی ٹی معاہدہ ریفارمز سے متعلق نظرثانی کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے مزید کہا کہ پُرامن جوہری ٹیکنالوجی کے استعمال کے حق کو انکار نہیں کیا جاسکتا لہذا جو ممالک جوہری ھتھیار رکھتے ہیں ان کو یہ حق نہیں کہ تخفیف اسلحہ کا بہانہ بنا کر دوسرے ممالک کو پُرامن جوہری ٹیکنالوجی کے استعمال سے محرو رکھیں.

انہوں نے کہا کہ پُرامن مقاصد کے استعمال کے لئے جوہری سرگرمیوں کا فروغ تمام شکل میں ہونا چاہئے اور اس حوالے سے این پی ٹی معاہدے میں بھی ذکر کیا گیا ہے.

ایرانی سفیر نے مزید کہا کہ این پی ٹی معاہدے کی شق نمبر 4 کے مطابق تمام رکن ممالک کو پُرامن جوہری ٹیکنالوجی کے فروغ کا حق حاصل ہےلہذا دیگر ممالک بھی اس حوالے سے اپنی ذمے داری ادا کریں.

انہوں نے بعض ممالک کی جانب سے عالمی جوہری ادارے اور این پی ٹی کا غلط فائدہ اٹھانے پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران پُرامن جوہری سرگرمیوں میں سنجیدہ ہے اور اس مقصد کے لئے اہم کامیابیاں بھی حاصل کی ہیں.

رضا نجفی نے مزید کہا کہ جوہری توانائی کے پرامن استعمال کے لیے ایران کے پاس متعلقہ تجربہ، تربیت یافتہ افرادی قوت اور تنصیبات موجود ہیں. ہم جوہری تحفظ اور سلامتی کو اپنی قومی ذمہ داری سمجھتے ہیں اور اس سلسلے میں تمام ضروری اقدامات کررہے ہیں.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@