ایران نے مراکشی جماعت پولیساریو فرنٹ کیساتھ تعاون کے الزام کو مسترد کردیا

تہران، 2 مئی، ارنا - ایرانی دفترخارجہ کے ترجمان نے مراکشی جماعت 'پولیساریو فرنٹ' اور الجیریا میں ایرانی سفارتخانے کے درمیان تعاون کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں مداخلت نہ کرنا ایران کی خارجہ پالیسی کا اہم جز ہے.

'بہرام قاسمی' نے بدھ کے روز اپنے ایک بیان میں پولیساریو فرنٹ اور ایرانی سفارتکاروں کے درمیان تعاون سے متعلق مراکشی وزیر خارجہ کے دعوے کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ ایسے بیانات حقائق کے منافی ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران نے مراکشی حکام کے ساتھ حالیہ رابطوں اور مذاکرات میں اس مؤقف کا اظہار کرچکار ہے کہ ایرانی مداخلت پر مبنی الزامات بے بنیاد ہیں.
قاسمی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی خارج پالیسی دنیا کے تمام ممالک کی خودمختاری اور جغرافیائی سالمیت کا احترام اور ان کے اندرونی معاملات میں مداخلت نہ کرنے پر مبنی ہے.
اس سے پہلے مراکش نے ملک کی جماعت پولیساریو فرنٹ کو امداد دینے کے الزام میں اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم کردئے جبکہ پولیساریو فرنٹ نے اس الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس کا ایران کے ساتھ کسی بھی طرح کا تعاون نہیں ہے.
پولیساریو فرنٹ کے ترجمان محمد حداد نے مراکش حکومت کے الزام کی تردید کرتے ہوئے ملکی حکام سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنے دعوے کا ثبوت پیش کریں.
یاد رہے کہ مراکش نے ایران پر علیحدگی پسندوں کی حمایت اور مدد کے الزام پر سفارتی تعلقات توڑدیے ہیں.
مراکشی وزیر خارجہ ناصر بوریطہ نے ایران اور لبنانی تنظیم حزب اللہ پر علیحدگی پسند گروپ پولیساریو فرنٹ کے جنگجوؤں کو تربیت اور اسلحہ فراہم کرنے کا الزام عائد کیا ہے.
پولیساریو فرنٹ مغربی صحرا میں آباد صحراوی قوم کی مراکش سے آزادی کی گوریلا جنگ لڑ رہا تھا.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@