ایران، جوہری معاہدے سے امریکہ کی ممکنہ علیحدگی کی صورتحال کا سامنا کرنے کے لئے تیار

انزلی، 2 مئی، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے سے امریکہ کی ممکنہ علیحدگی کے بعد غیرمتوقع صورتحال پیدا ہوگی تاہم ایران اس کا سامنا کرنے کے لئے مکمل تیار ہے.

یہ بات حکومتی ترجمان 'محمد باقر نوبخت' جو اسٹریٹجک منصوبہ بندی اور نگرانی کے نائب صدر بھی ہیں نے بدھ کے روز ایران کے شمالی شہر انزلی میں یوم اساتذہ کی مناسبت سے ایک تقریب میں خطاب کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ قوی امکان ہے کہ 12 مئی کو امریکہ جوہری معاہدے سے نکل جائے گا لہذا اس کے بعد ملک میں غیرمتوقع صورتحال کا سامنا کرنے کے لئے تیار رہنا ہوگا.
انہوں نے مزید کہا کہ غیرمتوقع صورتحال کا سامنا کرنے کے لئے تیار ہیں اور اس مقصد کے لئے موثر حکمت عملی اور ضروری بجٹ کو بھی تیار کیا گیا ہے.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ اگر ڈونلڈ ٹرمپ 12 مئی تک ایران کے ساتھ جوہری معاہدے کی دوبارہ توثیق نہیں کرتے تو پھر ایران کے خلاف پابندیاں دوبارہ لاگو ہو جائیں گی.
صدر ٹرمپ نے 12 مئی کی تاریخ اس لئے مقرر کی ہے تا کہ یورپی ممالک ایران کے ساتھ بقول اُن کے جوہرے معاہدے میں موجود خرابیوں کو دور کر لیں.
دریں اثناء اعلی ایرانی قیادت نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی ممکنہ علیحدگی پر بھرپور ردعمل دیا جائے جس میں ایران کی بھی جوہری معاہدے سے علیحدگی اور این پی ٹی معاہدے سے نکلنا شامل ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@