جوہری معاہدہ: ٹرمپ نے امریکہ کو بدنام کردیا: بروجردی

دمشق، 2 مئی، ارنا - اعلی ایرانی رکن پارلیمنٹ نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے سے متعلق ڈونلڈ ٹرمپ کی مسلسل خلاف ورزیوں سے امریکی ساکھ کو نقصان اور وہ دنیا میں بدنام ہوگیا ہے.

یہ بات ایرانی پارلیمنٹ کی قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیٹی کے چیئرمین 'علاء الدین بروجردی' نے شامی دارالحکومت دشمق میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے مزید کہا کہ جوہری معاہدے میں ٹرمپ انتظامیہ کی خلاف ورزیوں کو دیکھ کر یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ امریکہ عالمی سطح پر ناقابل بھروسہ ملک ہے.

بروجردی نے کہا کہ ایران پابندیوں کے خاتمے کی خاطر اپنی جوہری سرگرمیاں کم کرنے پر راضی ہوگیا مگر اسی دوران ایران پر نئی پابندیاں بھی عائد ہوئیں.

انہوں نے مزید کہا کہ ایسے منفی اقدامات کے پس منظر میں حکومت ایران، عوام اور پارلیمنٹ اب یہ ضروری نہیں سمجھتے ہیں کہ جوہری معاہدے میں شامل رہیں.

علا الدین بروجردی نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران صرف چند دن کے اندر یورینیم کی افزودگی کی سطح میں اضافہ کرسکتا ہے کہ تاہم جوہر ھتھیار ہماری ریڈلائن ہے اس حوالے سے ہم این پی ٹی معاہدے میں شامل ہیں اور اس کے علاوہ ایرانی سپریم لیڈر کے تاریخی فتوے میں بھی جوہری ھتھیاروں کے استعمال کو حرام قرار دیا گیا ہے.

انہوں نے ناجائز صہیونی ریاست کے پاس موجود خطرناک جوہری اور دیگر مہلک ھتھیاروں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اگر امریکہ کو جوہری ھتھیاروں سے تشویش ہے تو کیوں نہیں اسرائیل کا رخ کرتے جس کے پاس 200 مہلک ھتھیار ہیں جو مشرق وسطی اور دنیا کے لئے خطرے کا باعث ہے.

اعلی ایرانی رکن پارلیمنٹ نے ڈونلڈ ٹرمپ کے امریکی سفارتخانے کو تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کے فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے اس فیصلے سے نہ صرف امت مسلمہ کے خلاف کھلی جنگ کا اعلان کیا بلکہ اس نے تمام الہامی ادیا کی توہین کی.

شام کے خلاف امریکہ، برطانیہ اور فرانس کی جارحیت کو شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ اقدام عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی تھا.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@