معاشی سرگرمیوں میں ویلیو ایڈڈ میں اضافہ عالمی تعاون کیلئے سنہری موقع ہے: ایران

تہران، 31 جنوری، ارنا - ایران کے وزیر صنعت و تجارت نے کہا ہے کہ ملک میں تجارتی سرگرمیوں میں ویلیو ایڈڈ غیرمعوملی سطح پر ہے جس سے بین الاقوامی تعاون کے لئے راہ ہموار ہوجائے گی.

یہ بات 'محمدرضا شریعتمداری' نے گزشتہ روز 'ایرانی سٹیل اور کان کنی صنعتوں کے مستقبل' کے عنوان سے منعقدہ اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامی انقلاب کی کامیابی کی ابتدا سے ملک کی اسٹیل کی پیداواری کی صلاحیت 5 لاکھ ٹن تھی مگر آج موجودہ صورتحال میں اس کا حجم تین کروڑ ٹن سے زائد پہنچ گیا ہے.

انہوں نے دنیا میں سٹیل پیدا کرنے والے ممالک میں ایران کی 14ویں پوزیشن کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں اگلے آٹھ سال تک اس کے حجم کو 5.5 کرور تک پہنچنے کے لئے بھرپور کوششیں کرنی چاہیئں.

انہوں نے کہا کہ ایرانی سٹیل شعبے کی ترقی کے لئے 16 کروڑ ٹن آئرن ایسک کی ضرورت ہے لہذا اس کی کمی کے معاوضہ کے لئے منصوبہ بندی پروگرام کے مطابق عمل کرنا ناگزیر ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ہم اس حوالے سے تمام غیرملکی سرمایہ کاروں اور نجی شعبوں کے ساتھ باہمی تعاون بڑھانے کا خیرمقدم کرتے ہیں.

ایرانی وزیر صنعت کان کنی اور تجارت نے ایرانی اسٹیل کی پیداوار کی 30 فیصد برآمدات کو ایک اہم موڑ قرار دیتے ہوئے کہا کہ 2017 کے دوران سٹیل کی پیداوار میں 20 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا ہے.

انہوں نے کہا کہ کان کنی ذخائر تک رسائی تک عالمی تعاون کے ساتھ منظم ہونا چاہیئے اسی لئے نئی ٹیکنالوجی کو استعمال کرنا ضروری ہے.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ کان کنی سرگرمیوں کی توسیع کے لئے عالمی تعاون کے فریم ورک کے تحت نئی ٹیکنالوجی کو استعمال کرنا اور مائنز کی سیکورٹی نہایت اہم ہے.

تفصیلات کے مطابق، مشرق وسطی میں 2017 کو اسلامی جمہوریہ ایران کی سٹیل کی پیداوار کا حجم 66.5 فیصد تک پہنچ گئی اور 2016 کے مقابلے میں 5 فیصد کا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے.

9393*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@